Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  15

امریکی امداد میں کٹوتی، ماریہ سلطان کا تجزیہ

SAMAA | - Posted: Aug 3, 2018 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Aug 3, 2018 | Last Updated: 4 years ago

دفاعی تجزیہ کار ماریہ سلطان کا کہنا ہے کہ پاکستان میں نئی حکومت کے قیام سے پیشتر امریکہ کا امداد میں کٹوتی کرنا اس بات کی عکاسی کرتی ہے کہ امریکہ پاکستان کو خطے کی پالیسی میں ایک سیکیورٹی کے نقطہ نظر سے دیکھ رہا ہے۔

سماء سے بات کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ امریکہ کے پالیسی ساز پاکستان کو اقتصادی نقطہ نظر سے دیکھنے سے قاصر رہے ہیں۔

ان کے مطابق، امریکہ کا امداد میں کٹوتی کرنا معمول کی کارروائی ہے۔ اس سے پاک امریکی تعلقات پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی دفاعی بجٹ میں پاکستان کی امداد میں کٹوتی کے جاری کردہ اعلاميے ميں بتايا گيا ہے کہ امريکي سینیٹ نے سات سو سولہ ارب ڈالر کے دفاعی بجٹ کی منظوری دی ہے۔

بِل میں پاکستان کے لیے فوجی امداد کی مد میں پندرہ کروڑ ڈالر مختص کیے گئے ہیں، جو پاکستان کو اپنی سرحدوں کی سيکیورٹی بہتر بنانے کے لئے دیئے جائیں گے۔

گزشتہ سال امریکا نے اپنے دفاعی بجٹ میں پاکستان کے لیے"کولیشن سپورٹ فنڈ" کی مد میں ستر کروڑ ڈالر مختص کیے تھے۔ بل میں امریکی امداد طالبان کے خلاف کارروائی سے مشروط کرنے کی شق ختم کر دی گئی ہے۔ امريکي سینیٹ نے نیشنل ڈیفنس آتھورائزیشن ایکٹ نامی یہ بل دس کے مقابلے میں پچياسي ووٹوں سے منظور کیا۔
WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube