Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

لاہورطوفانی بارش میں ڈوب گیا،6افراد جاں بحق،اورنج لائن ٹریک متاثر

SAMAA | - Posted: Jul 3, 2018 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Jul 3, 2018 | Last Updated: 4 years ago

لاہور ميں موسلا دھار بارش میں سڑکيں تالاب بن گئیں، اورنج لائن ٹریک کے بڑے حصے پر موسلا دھار بارش کے باعث گڑھا پڑگیا۔ کئی گھنٹوں سے جاری موسلا دھار بارش سے متعدد علاقے کئی کئی فٹ پانی میں ڈوب گئے۔

دو سو پچاس سے زائد ملی ميٹر بارش برسنے پر شہري گھروں ميں محصور ہو کر رہ گئے۔ شہر میں دو سو فيڈر ٹرپ، کرنٹ لگنے سے تين افراد جاں بحق جب کہ متعدد زخمی ہوگئے۔ محکمہ موسمیات نے مزید بارش کی پیش گوئی کردی۔

اورنج لائن ٹریک:

لاہور کے اورنج لائن ٹریک پر رواں سال جنوری میں کام شروع ہوا تھا،جو مارچ میں مکمل ہوا۔ جنرل پوسٹ آفس (جی پی او) کی مرکزی عمارت کے عین سامنے بنے اورنج لائن کا ٹریک موسلا دھار بارش کا بوجھ نہ سہہ سکا۔ ٹریک پر کئی فٹ گہرا گڑھا بننے سے لاہور کی مصروف ترین سڑک پر ٹریفک کانظام مفلوج ہوکررہ گیا۔ مال روڈ کے عین بیچوں بیچ بنے اس ٹریک پر گڑھے کو پر کرنے کیلئے مٹی کے ٹرک منگوالیے گئے ہیں، گڑھے کی بھرائی کیلئے ٹریک کے طرف آنے والے تمام راستوں کو بند کرنے سے شہر میں شدید ٹریک جام ہے۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ کرین کی مدد سے ان گڑھوں کی بھرائی کی جائے گی۔

ایمرجنسی نافذ اور واسا کا عملہ:

ڈپٹی کمشنر لاہور کی جانب سے شہر میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔ اس موقع پر ڈپٹي کمشنر انوار الحق نے شہر کے نشيبي علاقوں کا دورہ بھی کیا اور نکاسي آب کے انتظامات کا جائزہ ليا۔ ڈپںی کمشنر کی واسا عملے کو متاثرعلاقوں ميں پہنچنے کي ہدايت کے بعد عملہ سڑکوں پر موجود ہے، تاہم مسلسل بارش کے باعث پاني نکالنے ميں دشواري کا سامنا ہے، موسلا دھار بارش کے آگے ضلعی انتظامیہ بھی بے بس نظر آتی ہے۔

بارش کا پانی گھروں میں داخل ہونے سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ ہربنس پورہ، باغبان پورہ، گڑھی شاہو اور مغل پورہ سے ملحقہ علاقے سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں جہاں سڑکوں پر کئی کئی فٹ پانی جمع ہوگیا ہے۔ ایم ڈی واسا کے مطابق واسا کا عملہ رات سے نکاسی آب میں مصروف ہے، بارش رکنے کے بعد دو سے تین گھنٹے شہر سے پانی نکالنے میں لگ سکتے ہیں۔

پروازیں:

طوفانی بارشوں نے پروازوں کا شیڈول بھی درہم برہم کردیا۔ لاہور ائیر پورٹ پر موسم کی خرابی کے باعث پروازوں کا شیڈول شدید متاثر ہوا۔ بیرون ملک جانے والی متعد د پروازیں تاخیر کا شکار ہوئیں اور لاہور آنے والی پروازوں کا رخ دوسرے شہروں کی جانب موڑ دیا گیا۔

پورے لاہور میں ٹریفک جام:

بارش کے باعث پورا لاہور جام ہوگیا، جیل روڈ سمیت مختلف علاقے میں ٹریفک جام، سب پھنس کر رہ گئے۔ بيشتر لوگ دفتر نہیں پہنچ پائے۔

مال روڈ، جيل روڈ، فيروزپور روڈ، چوبر جي، قرطبہ چوک، لکشمي چوک، گلبرگ، ائيرپورٹ کے اطراف کی آبادیاں، شادمان، مسلم ٹاؤن کے علاقے زير آب آنے کے بعد ڈوب گئیں۔ شدید بارشوں کے باعث سڑکیں اور انڈر پاس تالاب کا منظر پیش کرنے لگے ہیں اور حد نگاہ تک گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔

 

کہاں کتنی بارش؟

فرخ آباد ميں 252 ، لکشمي چوک ميں 243ملي ميٹربارش ريکارڈ

چوک ناخدا ميں 216، پاني والاتالاب ميں 210ملي ميٹربارش ہوئي

مغلپورہ ميں 185، علامہ اقبال ٹاون ميں 171ملي ميٹربارش ہوئي

جيل روڈ، تاجپورہ کے علاقوں ميں 170ملي ميٹربارش ريکارڈہوئي

گلشن راوي ميں 163ملي ميٹربارش ہوئي

بجلی بند:

صوبائی دارالحکومت میں رات ساڑھے 12 بجے سے شروع ہونے والی بارش نے صبح سویرے مزید شدت اختیار کر لی۔ فرسودہ ترسیلی نظام کے باعث لیسکو کے ساڑھے تین سو فیڈرز ٹرپ کرگئے ہیں جس کے باعث شہر میں بجلی کی فراہمی معطل ہوگئی ہے، لیسکو حکام کا کہنا ہے کہ بارش رکنے کے بعد ہی بجلی کی فراہمی کا کام شروع ہوسکے گا۔ گلبرگ، والٹن، کاہنہ، چونگی امرسدھو، جنرل ہسپتال کی ملحقہ آبادیوں کے علاوہ شمالی لاہور، اندرون شہر، گلشن راوی اور ملحقہ علاقوں ، داروغہ والا، مناواں سے رات کو بجلی غائب ہوگئی، جس کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

پانی کی سطح اور ڈیم:

دوسری جانب ملک کے مختلف علاقوں حافظ آباد، شیخوپورہ، کلرکہار، پنڈ دادن خان میں بھی گرچ چمک کے ساتھ موسلا دھار بارش ہوئی جس کے باعث موسم خوشگوار ہوگیا۔ ارسا کے مطابق ملک بھر میں بارشوں کے بعد ڈیموں میں 4 سے 5 فٹ پانی کی سطح میں اضافہ ہوگا جس کے باعث آبی ذخائر میں کمی کے خدشات کم ہوجائیں گے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube