Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  16

کراچی میں گرفتار دہشت گرد کالعدم تحریک طالبان کا اہم کارندہ نکلا

SAMAA | - Posted: Jun 5, 2018 | Last Updated: 4 years ago
Posted: Jun 5, 2018 | Last Updated: 4 years ago

کراچی میں سی ٹی ڈی کے ہاتھوں گرفتار دہشت گرد کالعدم جماعت کا اہم کارندہ نکلا۔ ملزم نے بونیر میں ایف سی اور پولیس کی متعدد چوکیوں پر دستی بم سے حملے کیے۔

منگوپیر نادرن بائی پاس کے قریب رینجرز چوکی پر ہونے والے خودکش حملے کا مقدمہ سی ٹی ڈی میں درج کرلیا گیا۔

سی ٹی ڈی کے ہاتھوں گرفتار دہشت رحمت علی شاہ کی تفتیشی رپورٹ سماء کو موصول ہوگئی۔ گرفتار دہشتگرد نے شریک جرم ساتھیوں کے نام اگل دیئے۔

اس نے 2008 میں کالعدم تحریک طالبان میں شمولیت اختیار کی تھی۔ بعد ازاں، 2009 میں امیر یاسین عرف ملا کی سربراہی میں پولیس چوکی پر دستی بم سے حملہ کیا۔

تیس اپریل 2009 کو بونیر جوڑ ایف سی کیمپ پر حملہ کیا۔

ہفتے کی شام منگھو پیر نادرن بائی پاس کے قریب رینجرز اہلکاروں پر ہونے والے خود کش حملے کا مقدمہ رینجرز حکام کی مدعیت میں سی ٹی ڈی آپریشن سیل میں درج کرلیا گیا۔

مقدمہ میں دہشت گردی ایکٹ، مقابلے اور ناجائز اسلحہ رکھنے کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔

دوسری جانب نارتھ کراچی سرسید ٹاؤن میں دوسری منزل سے گر کر جاں بحق ہونے والی صباء کی پوسٹ مارٹم رپورٹ سامنے آگئی۔

پولیس کے مطابق، صبا کے جسم پر بظاہر تشدد کا کوئی نشان موجود نہیں۔

شوہر اکرام اور جیٹھ رمیز موت کے وقت دکان پر تھے۔ تاہم صبا کے والد کی مدعیت میں درج ہونے والے مقدمہ میں شوہر جیٹھ ساس اور جیٹھانی کو قتل میں ملوث اور نامزد شامل کیا گیا ہے۔

جبکہ رینجرز نے مختلف کارروائیوں میں چار اور پولیس نے گیارہ ملزمان کو گرفتار کرلیا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube