Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

فیض آباددھرناختم کیسےہوا،فوج کاکیاکرداررہا،اہم انکشافات

SAMAA | - Posted: Nov 28, 2017 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Nov 28, 2017 | Last Updated: 4 years ago

لاہور: مُلک بھر ميں دھرنا ختم کرنے کے اعلان کے بعد تحريک لبيک کے سربراہ اور سرپرست اعلي پہلي بار سماء کي اسکرين پرآگئے۔خادم حُسين رضوي نے معاہدے سے متعلق اہم انکشافات کئے۔

سماءسے بات کرتےہوئےسرپرست اعلي تحريک لبيک يا رسول اللہ نےبتایاکہ  شہباز شريف، احسن اقبال سميت کسي حکومتي شخصيات سے مذاکرات ہوئے نہ معاہدہ ہوا۔

انھوں نے کہاکہ ہمارے مذاکرات جنرل فيض سے ہوئے اور وہي ضامن بھي ہيں۔ انھوں نے انکشاف کیاکہ آٓرمي چيف کے کہنے پر معاہدہ ہوا اور اس پراُن کا شکريہ ادا کيا۔ انھوں نے مزیدبتایاکہ راولپنڈي ميں ہمارے چھ لوگ چوہدري نثار کے گھر کے باہر قتل کئے گئے۔

سربراہ تحريک لبيک رسول اللہ خادم حُسين رضوي کاکہناتھاکہ جس کوگلي گلي ميں چور کہيں،اُس کو ضامن کيسے مانتے۔شہباز شريف جھوٹ بول رہا ہے، اُس کا ثالثي ميں کوئي کردار نہيں۔ انھوں نے مزید انکشاف کیاکہ زاہدحامد کا استعفيٰٗ آرمي چيف جنرل قمرجاويد باجوہ کے کہنے پرديا گيا۔کسي بھي حکومتي شخصيات کي زبان پر اعتبار نہيں تھا۔جب انہوں نے قتل وغارت شروع کردي تو پھر فوج نے ثالثي کا کردار ادا کيا۔ سماء

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube