Monday, May 16, 2022  | 1443  شوّال  14

وزیراعظم نےجےآئی ٹی کےسامنےکیاکہا،تہلکہ خیزانکشافات

SAMAA | - Posted: Jul 12, 2017 | Last Updated: 5 years ago
SAMAA |
Posted: Jul 12, 2017 | Last Updated: 5 years ago

اسلام آباد: جے آئی ٹی رپورٹ کی مزید تفصیلات سامنے آگئی ہیں۔ وزیراعظم نوازشریف نے جے آئی ٹی سے تعاون نہیں کیا۔ میاں صاحب  انکم اور ویلتھ ٹیکس پر تحفظات کی وضاحت بھی نہ کر سکے۔پورا شریف خاندان ہی بالواسطہ یا بلا واسطہ لندن فلیٹس کا مالک ہے ۔

پاناما کاہنگامہ جاری ہے۔وزیراعظم کے بیان سے متعلق جے آئی ٹی رپورٹ میں مزید تہلکہ خیزانکشافات سامنے آرہےہیں۔ وزیراعظم نے کسی بھی سوال کا اطمینان بخش جواب نہ دیا۔انھوں نے دوران تفتیش عدم تعاون کا مظاہرہ کیااوران کارویہ ٹال مٹول والارہا۔ ان کےبیان کا زیادہ تر حصہ سنی سنائی باتوں پر مشتمل تھا۔انہیں ٹرسٹ ڈیڈ کا کوئی علم ہی نہیں تھا ۔

وزیراعظم کےبیانات کےچندحصے تو حقائق سے بالکل ہٹ کر تھے۔ رپورٹ میں مزید بتایاگیاہےکہ نواز شریف کسی نہ کسی طرح خاندانی کاروبار سے منسلک ہیں۔ ان کا پورا خاندان بلواسطہ یا بلاواسطہ لندن فلیٹس کا بینی فیشری ہے۔

رپورٹ کے مطابق وزیراعظم انکم اور ویلتھ ٹیکس سے متعلق تحفظات کی وضاحت بھی نہ کر سکے۔

وزیراعظم نے بیان میں کہا کہ وہ گلف اسٹیل کے پارٹنر محمد حسین کو نہیں جانتے مگر بعد میں یہ بات بھی غلط ثابت ہوئی۔

دوران تفتیش وزیراعظم نے  دونوں قطری خطوط کی تائید بھی کی ۔ جے آئی ٹی کےروبروپل پل بدلتاموقف بھی سامنے آیا ہے۔ وزیر اعظم نے جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم کے سامنے وزیر اعظم نے سب سے پہلے بیان دیا کہ انہوں نے قطری شہزادے کے دونوں خط نہیں پڑھے۔دوسرے بیان میں میاں صاحب کا کہنا تھا کہ شاید انہوں نے قطری خط دیکھے بھی نہیں۔  سماء

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube