Wednesday, May 18, 2022  | 1443  شوّال  16

موت کے دو سال بعد سزائے موت کا قیدی بری

SAMAA | - Posted: Feb 2, 2017 | Last Updated: 5 years ago
SAMAA |
Posted: Feb 2, 2017 | Last Updated: 5 years ago

لاہور: ہائیکورٹ نے موت کے دو سال بعد سزائے موت کے قیدی کو بری کردیا، باپ کہتا ہے بيٹا چلا گيا اب انصاف ملا توکیا ملا؟۔

ہائیکورٹ نے موت کے دو سال بعد سزائے موت کے قیدی کو بری کردیا، جيل سے رہائي کا پروانہ تب ملا جب موت کا پروانہ ملے زمانہ ہوچکا تھا سيد رسول دوران قید ہی زندگی کی قید سے آزاد ہوگیا۔

نہ سزای ملی نہ انصاف مل سکا بس موت مل گئی، تنہائی میں بیٹھا اداس بوڑھا باپ اب کیوں جشن منائے؟ اورکس کے ساتھ منائے؟ اسکے ایک بیٹے کی جان پہلے ہی مخالفین نے لے لی ۔

بھيرہ کا سيد رسول دوہزارنو ميں قتل کے الزام ميں گرفتار کیا گیاسيشن عدالت نے سزائے موت سنائي تو ہائي کورٹ ميں اپيل دائر کردي گئي ۔

ايڈووکيٹ چوہدري نثار کا کہنا تھا کہ میں نے خط لکھے جیل نے کہا کہ اس نام کا ملزم نہیں ہے، پھر میں نے گھر رابطہ کیا تو پتہ چلا کہ وہ دل کا دورہ پڑنے سے مرچکاہے۔

مقدمہ قتل ميں سيد رسول کے خلاف ٹھوس شہادت نہيں مل سکي، عدالت نے اپنے فیصلے میں ملزم کو فورا رہاکرنے کا حکم دیا مگربہت دیر ہوچکی تھی۔ سماء

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
Facebook Twitter Youtube