Tuesday, May 17, 2022  | 1443  شوّال  15

بہاماس لیکس نے تہلکہ مچادیا

SAMAA | - Posted: Sep 22, 2016 | Last Updated: 6 years ago
SAMAA |
Posted: Sep 22, 2016 | Last Updated: 6 years ago

bahama

کراچی:پاناما لیکس کی حل ہلچل ابھی ختم نہیں ہوئی کہ بہاماس میں بھی آف شور کمپنیوں کا شور اٹھ گیاہے۔ نئی دستاویزات میں 150 پاکستانیوں کے نام سامنے آئے ہیں۔

انٹرنیشنل کنسورشیم آف انوسٹی گیٹیو جرنلسٹس کو موصول ہونےوالی فہرست کےمطابق ایف بی آئی حکام نے بتایا ہےکہ کارپوریٹ رجسٹری کی دستاویزات شواہد کا حصہ ہیں۔ نئی فہرست میں سیاسی شخصیات، بزنس مین، مالیات، تعمیرات، صنعت، ٹیکسٹائل اور انجینئرنگ سمیت مختلف صنعتوں سے تعلق رکھنے والے افراد کے نام سامنے آئے ہیں جن میں جماعت اسلامی کے پروفیسر خورشید، ثمینہ درانی، عبید الطاف خانانی، مشرف دور کے وزیر صحت نصیر خان کے بیٹے جبران، افغان صدر حامد کرزئی کے کزن احمد پوپل، یورپی یونین کے سابق مسابقتی کمشنر، کولمبیا کے سابق وزیر، چلی کے آمر آگسٹو پنوشے کے صاحبزادے، سابق قطری وزیراعظم اور برطانوی وزیر داخلہ کے نام نمایاں ہیں۔

bahama1

ایف بی آئی کے ایک سابق عہدیدار کا کہنا ہے کہ کارپوریٹ رجسٹری کی دستاویزات شواہد کا حصہ سمجھی جاتی ہیں اور یہ اہم معاملہ ہے۔ تفصیلات کے مطابق، بہاماس 700؍ چھوٹے جزیروں پر مشتمل ایک چھوٹی ریاست ہے جو امریکا کے جنوب میں ہے اور یہاں کے رازداری کے قوانین اور غیر ملکی حکومتوں کو معلومات کی فراہمی میں ہچکچاہٹ کی وجہ سے اسے ’’کیریبیئن کرٹین‘‘ کہا جاتا ہے۔ بہاماس لیکس کا معاملہ پاناما لیکس سے الگ ہے۔ سماء

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube