Thursday, May 19, 2022  | 1443  شوّال  17

پی ٹی آئی کارکن قتل کیس، میاں افتخار حسین ضمانت پر رہا

SAMAA | - Posted: Jun 2, 2015 | Last Updated: 7 years ago
SAMAA |
Posted: Jun 2, 2015 | Last Updated: 7 years ago

اسٹاف رپورٹ

ںوشہرہ : خیبرپختونخوا کے سابق وزیر میاں افتخار حسین کو ضمانت پر رہا کردیا گیا، ان پر تحریک انصاف کے کارکن حبیب اللہ کی ہلاکت کا الزام تھا۔ان کا کہنا تھا کہ میرے خلاف طاقت استعمال کرنے والے خود شرمندہ ہیں۔

نوشہرہ کی عدالت میں اے این پی رہنماء اور سابق صوبائی وزیر میاں افتخار حسین کی ضمانت کی درخواست دائر کی گئی، عدالت میں مقتول کے والد نے اپنا تحریری بیان جمع کرایا ہے جس میں میاں افتخار کو بے گناہ قرار دیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ میرا بیٹا میاں افتخار حسین کی ایماء پر قتل نہیں ہوا، ان کا اس کیس سے کوئی تعلق ہیں، ہم نے اے این پی رہنماء کا نام ایف آئی آر میں نہیں لکھوایا۔

عدالت نے میاں افتخار کی درخواست ضمانت منظور کرتے ان کی رہائی کا حکم جاری کردیا۔

سب جیل سے رہائی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میاں افتخار حسین نے کہا کہ پولیس کی موجودگی میں مجھ پر حملہ کیا گیا، جس نے میرے خلاف طاقت استعمال کی وہ خود شرمندہ ہیں، موجودہ حکومت کے رویئے پر بہت دکھ ہوا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ رہائی پر خدا کا شکر گزار ہوں، الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا کا بھی مشکور ہوں، میں اپنی دھرتی پر جان نچھاور کرنے کو تیار ہوں۔

واضح رہے کہ میاں افتخار حسین کو ہفتے کی شب گرفتار کیا گیا تھا جبکہ عدالت نے ان کا ریمانڈ بھی منظور کیا تھا، اب مقتول کے والد کے بیان کے بعد انہیں رہا کیا گیا۔ سماء

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube