سبزہلالی پرچم لہرانے اور قومی ترانا پڑھنے پر آسیہ اندرابی کے خلاف مقدمہ

ویب ایڈیٹر:


سرینگر   :   مقبوضہ کمشیر میں حریت رہنما آسیہ اندرابی کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

آزادی اظہار کے جھوٹے دعوے دار اور اقلیتوں کے حقوق کے حقوق کے نام نہاد دعوے دار بھارتی سرکار نے دہرا معیار ختم نہ کیا، دنیا کی سب سے بڑی سیکولر ریاست ہونے کا دم بھرنے والا بھارت انتہا پسند ہی نہیں تنگ نظر بھی نکلا۔  کرکٹ میں پاکستانی فتح کا جشن منانے پر کشمیری نوجوانوں کو تعلیم سے محروم اور انکے خلاف بغاوت کا مقدمہ بھی درج کرنے والے بھارت  نے ایک بار پھر  پاکستان دشمنی کا ثبوت دے دیا، یوم پاکستان پر حریت رہنما آسیہ اندرابی نے سری نگر میں تقریب کے دوران پاکستان کا قومی ترانہ پڑھا تو انتہا پسند ہندوؤں میں کھلبلی مچ گئی۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں حریت رہنما  آسیہ اندرابی کے خلاف کشمیری پولیس کی جانب سے غیر قانونی اقدام کی دفعہ کے تحت مقدمہ درج کیا گیا۔

الزام لگانے والے بھارتی شاید یہ بھول گئے، کہ جس وادی میں آسیہ نے پاکستانی پرچم لہرایا در حقیقت وہ پاک وطن ہی کا انگ ہے ۔


آسیہ اندارابی کے خلاف دائر ایف آئی آر میں بھارت مخالف اور پاکستان کے حق میں تقریر کرنے پر بھی دفعات شامل کی گئیں، بھارتی میڈیا کے مطابق حریت رہنماؤں کی جانب سے ایک بار پھر بھارت مخالف کارروائیوں میں تیزی آئی ہے۔ دوسری جانب کشمیریوں کی آواز اور کارروائیوں کو دبانے کیلئے کپواڑہ، سری نگر، سوپورہ، خنزار اور شمالی کشمیر میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے، جب کہ وادی کے حالات کو قابو کرنے کیلئے مزید نقری بھی طلب کرلی گئی۔ واضح رہے کہ معروف حریت رہنما آسیہ اندارابی دخترانی ملت کے نام سے قائم پارٹی کی سربراہ اور سید علی شاہ گیلانی کے قریبی رفقا میں سے ہیں۔ سماء

اور

پر

India vs Pakistan

Tabool ads will show in this div