یمن پرسلامتی کونسل اجلاس،ہوتی،احمدصالح کوبلیک لسٹ کرنیکی قراردادمنظور

ویب ایڈیٹر:

نیویارک : یمن میں امن کیلئے ایران نے چار نکاتی پلان پیش کردیا، جب کہ دوسری جانب سلامتی کونسل نے حوثیباغیوں کو اسلحہ کی فراہمی روکنے سے متعلق قرارداد منظور کرلی۔

 

ايران کا چار نکاتي پلان پیش کردیا گیا، جب کہ سلامتي کونسل کا حوثي باغيوں کو اسلحے کي سپلائي روکنے کااعلان کردیا، تاہم يمن ميں امن کي کوششيں تيز ہوگئيں۔

 

سلامتي کونسل کے اجلاس ميں حوثي باغيوں کو اسلحے کي فراہمي روکنے سے متعلق قرار داد کے حق ميں چودہ ووٹ آئے، تاہم روس نے حمايت نہيں کي

قرارداد کے تحت حوثي ليڈر عبدالمالک حوثي اور سابق يمني صدر عبداللہ صالح کے بيٹے احمد صالح کو بھي بليک لسٹ کرديا گيا۔

 

دوسري جانب ايران نے يمن ميں امن کے لئے چار نکاتي پلان اقوام متحدہ ميں جمع کراديا، جنگ بندي،امداد اور مذاکرات سميت مشترکہ حکومت کي تجاويز پلان کا حصہ ہيں۔ ادھر

عرب اتحاد نے حوثي باغيوں کے خلاف آپريشن جاري رکھنے کا اعلان کيا ہے، تازہ حملے ميں عدن کے اسٹيڈيم کو نشانہ بنايا گيا، ترجمان کے مطابق حوثي باغي تعليمي اداروں اور کھيلوں کے مراکز کو اسلحہ خانے کے طور پر استعمال کررہے ہيں۔ سماء

appeal

planned

idp

spokesperson

Tabool ads will show in this div