بھارت انتہا پسند جماعت کی پاکستان کیخلاف پھر زہر فشانی

Nov 30, -0001

ویب ایڈیٹر :


نئی دہلی   :   بھارتی ہندو انتہا پسند جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے رکن  انورنگ ٹھاکر کا کہنا ہے کہ بھارتی ٹيم کا پاکستان ميں کھيلنا ممکن نہيں، بھارت کو پاکستان کے ساتھ کرکٹ نہیں کھیلنی چاہئیے۔ جنتا پارٹی کے رکن نے روایتی پروپگنڈے کا سہارا لیتے ہوئے ایک بار پھر کرکٹ سیریز کی مخالفت کر ڈالی۔

بھارتی ذرائع ابلاغ کے مطابق بھارتی لوک سبھا کے اجلاس کے دوران  حکمراں جماعت بھارتی جنتا پارٹی کے ارکان نے ایجنڈے سے ہٹ کر پاکستان اور بھارت کے درمیان ہونے والی کرکٹ سیریز کی مخالفت کردی، اراکین کی جانب سے صرف اسی پر بس نہ ہوا، بلکہ وہ روایتی حسد، جلن اور تعصب بھی پاکستان کے خلاف اگلنا شروع ہوگئے۔

سابق بھارتی سیکریٹری داخلہ آر کے سنگھ  جو بہار سے رکن اسمبلی  بھی ہیں، عجیب منطق پیش کرتے ہوئے کہنے لگے کہ بھارتی کھلاڑیوں کو کسی صورت پاکستان کیساتھ نہیں کھیلنا چاہیئے، پاکستان کے خلاف خوب زہر اگلتے ہوئے انہوں نے اپنی بھارت سرکار سے درخواست کی کہ پاک بھارت سیریز کو فوری طور پر منسوخ کیا جائے۔

ہندو انتہا پسند جماعت سے تعلق رکھنے والے لوک سبھا کے رکن کو اور کچھ نہ ملا تو ممبئی حملوں کے حوالے سے پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی کرتے رہے۔ انورنگ ٹھاکر کا کہنا تھا کہ پاکستان کیخلاف سيريزبھارت میں بھی ہوسکتی ہے، یو اے ای کے بجائے بھارت میں کھیلنا سود مند ہوگا، ٹھاکر کا مزید کہنا تھا کہ بھارتی ٹیم کا پاکستان میں کھیلنا ممکن نہیں، حکومت اجازت پر کسی اور ملک میں بھی کھیل سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھارتی شہر کولکتہ میں  چیرمین پی سی بی شہریا ر خان اور انڈین کرکٹ بورڈ کے صدر موہن ڈالمیا کے درمیان سیریز کی مفاہمتی یادداشت پر دستخط کئے گئے  جس کے مطابق  رواں سال دسمبر میں ہونے والی سیریز  3 ٹیسٹ، 5 ون ڈے  اور 2 ٹی ٹوئنٹی میچز پر مشتمل ہوگی، سیریز کی میزبانی پاکستان کرے گا جو یو اے ای میں کھیلی جائے گی، تاہم سیریز کو مودی سرکار کی مرضی سے بھی مشروط کیا گیا ہے۔ سماء

کی

Malaysia

کیخلاف

human trafficking

Tabool ads will show in this div