شریف خاندان کے خلاف مزید 3 گواہوں کے بیانات قلمبند

Dec 19, 2017

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/12/NS-Family-Hearing-Isb-Pkg-19-12.mp4"][/video]

اسلام آباد: شریف خاندان کے خلاف استغاثہ کے مزید تین گواہوں کے بیانات قلمبند کرلیےگئے، گواہوں نے جے آئی آٹی سربراہ واجد ضیاء کو قطری شہزادے کے خط اور مریم نواز کے اکاؤنٹ میں آنے والی رقوم کی تفصیل عدالت کو فراہم کر دی۔

نیب ریفرنسز میں نواز شریف دسویں بار احتساب عدالت میں پیش ہوئے میاں صاحب اور بیٹی مریم ایک ساتھ جبکہ کیپٹن صفدر الگ ،عدالت آئے فلیگ شپ ریفرنس میں گواہ ڈائریکٹر وزارت خارجہ آفاق احمد نے بتایا اٹھائیس مئی کو قطری شہزادے نے واجد ضیاء کے نام خط لکھا۔

بند لفافے میں سفارتخانے کو دیا گیا خط تیس مئی کو سربراہ جے آئی ٹی کو پہنچایا گیا، العزیزیہ ریفرنس میں گواہ نجی بینک لاہور کے آپریشنل منیجر یاسر شبیر کا بیان ریکارڈ کرلیا گیا۔

مریم نواز کے اکاؤنٹ میں منتقل ہونے والی رقوم اور 12 فروری 2010 سے جون 2017 تک نوازشریف کی بینکنگ کا ریکارڈ پیش کردیا۔

بتایا کہ چار مختلف ٹرانزیکشن کے زریعے 5 کرورڑ 91 لاکھ روپے مریم نواز کے اکاؤنٹ میں آئے۔۔تاہم کسی ٹرانزیکشن میں کوئی غیرقانونی عمل نہیں پایا گیا۔

لندن فلیٹس ریفرنس میں گواہ شکیل ناگرہ نے بیان دیا کہ سپریم کورٹ سے جے آئی ٹی کی تصدیق شدہ کاپیاں لیکر نیب کو فراہم کر دی ہیں۔

عدالت نے مزید دو گواہوں تسلیم خان، زاور منظور کی طلبی کے سمن جاری۔کرتے ہوئے سماعت تین جنوری تک ملتوی کردی، گواہ یاسر شبیر کو بھی مزید دستاویزات کے ساتھ آئندہ سماعت پر دوبارہ طلب کیا گیا ہے۔ سماء

SHARIF FAMILY

MARYAM NAWAZ

CAPTAIN SAFDAR

maryam

Assets reference case

Tabool ads will show in this div