نوازشریف مذاکراتی میزپرنہ آئےتواگلاپلان شروع کردونگا،عمران خان کی دھمکی

ویب ایڈیٹر:


لاہور   :   پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کا کہنا ہے کہ 2013 انتخابات میں دھاندلی ہوئی، آج لاہور نے فیصلہ دے دیا، میاں صاحب کے پاس 2 راستے ہیں، پہلا راستہ جوڈیشل کمیشن بناؤ، انصاف کےلیے 124 دن کا تاریخی دھرنا دیا، دوسرا راستہ آپ حکومت نہیں کرسکیں گے۔

لاہور میں پلان سی کے تحت جاری احتجاج، جلاؤ گھیراؤ اور ہنگامہ آرائی کے بعد کارکنان کپتان کا خطاب سننے چیئرنگ کراس پہنچ گئے، کھلاڑیوں کا لہو گرماتے ہوئے سربراہی پی ٹی آئی عمران خان کا کہنا تھا کہ ملک میں صاف شفاف انتخابات دیکھنا چاہتے ہیں، میاں صاحب!مذاکرات کی میز پر پہنچیں، 2013انتخابات کا احتساب چاہتے ہیں، قوم فیصلہ کر بیٹھی ہے کہ انتخابات میں فراڈ ہوا۔

عمران خان نے کہا کہ ووٹوں کی گنتی سے کیوں ڈرتے ہو؟  میاں صاحب! 48گھنٹے میں جوڈیشل کمیشن بن سکتا ہے، ہم پُرامن رہنا چاہتے ہیں، جوڈیشل کمیشن نہ بنا تو حکومت کرنا مشکل ہوگا، بچے بچے کے منہ پر ایک نعرہ ہے’’گونوازگو‘‘، گونوازگو سے مراد کرپٹ نظام کا خاتمہ ہے، ہم نواز شریف اور آصف زرداری کا احتساب کریں گے۔

وزیراعظم کو مخاطب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ میاں صاحب! قوم جاگ گئی ہے،انصاف چاہیے، قوم کو معلوم ہوگیا، کون تبدیلی نہیں چاہتی، قوم کا لوٹا گیا پیسہ واپس ملک میں لائیں گے، قوم مزید پاگل نہیں بنے گی،قوم جاگ گئی ہے، نیا پاکستان نظر آ رہا ہے، بچے، بوڑھے، خواتین جاگ گئی، لاہور کے تاجروں، ٹرانسپورٹرز اور خواتین کا شکریہ۔

انہوں نے حکومت اور وزیراعظم کو دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ نواز شریف میز پر نہ آئے تو میرا اگلا پلان تیار ہے، ہم دھاندلی قبول کرنے کو تیار نہیں، دھاندلی ثابت ہوئی تو قرضے شریف خاندان سے ادا کروائیں گے، شریف خاندان قرضہ لینے کا اختیار ہی نہیں رکھتا۔

آج ہونے والے افسوس ناک واقعات پر بھی عمران خان نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے مذمت کی اور کہا کہ  کارکن خواتین کی حفاظت کریں، ہراساں نہیں، میڈیا کوریج نہ دے تو مقصد پر نہیں پہنچ سکتے۔ سماء

کی

شروع

Benazir

Tabool ads will show in this div