وزیراعظم نے دہشت گردوں کی سزائے موت پر عمل درآمد کی منظوری دیدی

ویب  ایڈیٹر امبرین :

 

پشاور : وزیراعظم میاں محمد نوا ز نے دہشت گردی کے مقدمات میں سزائے موت کی پابندی کو ختم کردیا۔

 

وزیراعظم کے فیصلے کے بعد تمام دہشت گردی کے مقدمات میں سزاے موت پانے والے دہشت گردوں کو اب بالا آخر سزائے موت دی جائے گی۔ واضح رہے کہ پشاور اسکول قومی سانحہ کے بعد ملک بھر میں دہشت گردوں کو سزائے موت دینے کا پرزور مطالبہ کیا گیا ۔

 

پاکستان میں سزائے موت پر پیپلز پارٹی کی گزشتہ حکومت نے پابندی عائد کی تھی،ذرائع کے مطابق یورپی یونین سے معاشی فائدے کے حصول کی خاطر پابندی عائد کی گئی تھی ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق، پاکستان میں سزا یافتہ مجرموں کی ایک بڑی تعداد موجود ہے۔    وزیراعظم نواز شریف نے سانحہ پشاور کے بعد اقدام دہشتگردی میں ملوث افراد کو سزا دینے کے لئے پھانسی کی سزا پر پابندی اٹھانے کے احکامات جاری کئے جب کہ اس سے قبل سابق حکومت نے عالمی دباؤ پر پھانسی کی سزا پر پابندی عائد کی تھی۔

 

عدالتوں کی جانب سے دہشتگردی میں ملوث متعدد قیدیوں کو سزائے موت کا حکم سنایا جاچکا ہے تاہم سزائے موت پر پابندی کے باعث اس پر عملدرآمد نہیں کیا جاسکا تاہم اب وزیراعظم نے اس کی منظوری دے دی, واضح رہے کہ واضح رہے کہ آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے بھی گزشتہ روز وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف سے ملاقات کے دوران تجویز دی تھی کہ دہشتگردی کے مقدمات میں سزائے موت پانے والے مجرموں کو لٹکا دیا جائے ۔ قابل غور بات یہ ہے کہ اس وقت ملک کی مختلف جیلوں میں 400 سے زائد ہائی پر وفائل سمیت مختلف دہشت گرد موجود ہیں، وزیراعظم کے حکم کے بعد ملک بھر کی حساس جیلوں کی سیکیورٹی ریڈ الرٹ  کردی گئی ہے۔ سماء

میں

کی

کے

rizvi

نے

eid

boys

Tabool ads will show in this div