مقبوضہ بیت المقدس سے متعلق امریکی فیصلے کیخلاف مذمتی قرارداد منظور

اسلام آباد : سینیٹ نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کے فیصلے کیخلاف مذمتی قرارداد اتفاق رائے سے منظوری کرلی۔

سینیٹ اجلاس میں سینیٹر راجہ ظفر الحق نے ایوان میں 5 گھنٹے کی بحث کے بعد قرارداد پیش کرتے ہوئے کہا کہ سینیٹ آف پاکستان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے اور اپنا سفارتخانہ وہاں منتقل کرنے کے اعلان کی شدید مذمت کرتا ہے۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ امریکی صدر کا فیصلہ اقوام متحدہ کی قراردادوں بالخصوص 1980ء کی قرارداد نمبر 478 سمیت تمام بین الاقوامی قوانین اور کی خلاف ورزی ہے، سینیٹ آف پاکستان اس فیصلے پر اپنی شدید تشویش کا اظہار کرتا ہے،  قرارداد میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ اس معاملہ کا نوٹس لے اور اپنی قراردادوں پر عمل کروائے جو اس نے ماضی میں منظور کی ہیں۔

سینیٹ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ امریکی صدر کے اعلان نے امریکا کی طرف سے امن کی کوششوں کی قلعی کھول دی، مقبوضہ بیت المقدس مسلمانوں اور عیسائیوں کیلئے بھی مقدس مقام کا درجہ رکھتا ہے، امریکی صدر کے اعلان سے امن عمل کو سبوتاژ کرنے کے تاریک باب کا آغاز ہوگا۔

قرارداد کے مطابق بین الاقوامی برادری نے بھی امریکا کے اس فیصلے کو مسترد کیا ہے جس کا خیرمقدم کرتے ہیں، نہتے فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم کی بھی شدید مذمت کی گئی۔

قرارداد میں حکومت پر زور دیا گیا ہے کہ وہ پارلیمان کا مشترکہ اجلاس بلائے تاکہ اس صورتحال میں لائحہ عمل وضع کیا جاسکے۔ ایوان بالا نے قرارداد اتفاق رائے سے منظوری کرلی۔ سماء

SENATE

USA

US policy

Paletsine

OIC Meeting

TURKE

Jakarata

Tabool ads will show in this div