اسلام آباد ہائیکورٹ نے انتخابی بل کی دفعات معطل کردیں

اسلام آباد:ہائیکورٹ نے انتخابی اصلاحات بل دوہزارسترہ میں سیاسی جماعتوں کے لیے دوہزار ممبران کی لازمی شرط سے متعلق الیکشن ایکٹ کی دفعات دوسودو اور دو سوچارمعطل کردیں۔

چارسیاسی جماعتوں نے بل کی دفعات اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کی ہیں۔درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ بل میں شامل یہ دفعات آئین پاکستان اور بنیادی انسانی حقوق کے متصادم ہیں۔ کیس کی سماعت جسٹس عامر فاروق نے کی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کیا گیا نوٹس معطل کردیا۔نوٹس الیکشن ایکٹ دوہزار سترہ کی شق دوسودو کے تحت جاری کیا گیا تھا۔

الیکشن کمیشن نے نوٹس میں سیاسی پارٹیوں کو دو، دو لاکھ روپے جمع کرانے کی ہدایت کی گئی تھی۔نوٹس میں جماعتوں کو دو ہزار کارکنوں کے شناختی کارڈ جمع کرانے کی بھی ہدایت کی گئی تھی۔عدالت نے الیکشن کمیشن سمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری کرتےہوئے جواب طلب کرلیا۔

اسلام اباد ہائیکورٹ نے کیس کی سماعت نو جنوری تک ملتوی کردی۔ سماء

ECP

ELECTION COMMISSION OF PAKISTAN

ISLAMABAD HIGH COURT

Tabool ads will show in this div