دوسال کیلئے ترمیم لانے کا فیصلہ،ایکشن پلان کو ایکشن میں ڈھالنے کا وقت آگیا،وزیراعظم

ویب ایڈیٹر :

 

اسلام آباد : وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کا کہنا ہے کہ ان پندرہ روز میں ملک کی سیاسی قیادت نے بالغ نظری کا  ثبوت دیا، قومی قیادت نے مثالی اتحاد اور ذمہ داری  کا  مظاہرہ کیا، اب وقت آگیا ہے کہ ملک سے اس گند کو صاف کیا جائے، فتنہ و فساد پھیلانے والوں کو ختم کیا جائے، وزیراعظم نے آج کے اہم اجلاس میں اعلان کرتے ہوئے کہا کہ آئینی ترمیم اور آرمی ایکٹ میں ترمیم پر سب متفق ہیں، یہ ترمیم دو سال کیلئے نافذل العمل ہونگی، جب کہ اسی آج ہی قومی اسمبلی میں پیش کردیا جائے گا۔

 

دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ پھیکنے اور فتہ فساد برپا کرنے والوں کا انجام قریب آگیا، وزیراعظم نے ایکشن پلان کمیٹی کے مرتب کردہ تجاویز اور مسودے کو ایکشن میں ڈھالنے کا اعلان کردیا۔ جمعہ کے روز وزیراعظم ہاؤس میں ہونے والی تیسری آل پارٹیز کانفرنس سے خطاب میں وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کا کہنا تھا کہ

گزشتہ ہفتے ہونے والے آل پارٹیز کانفرنسز میں اس بات کا اعادہ کیا تھا کہ ایک ایکشن پلان تربیت دیا جائے، سیاسی قائدین نے 15 روز میں دوبارہ متحد ہوکر سیاسی پختگی کا ثبوت دیا ہے، اس سے قبل سانحہ پشاور کے بعد سترہ دسمبر کو ملک کی پوری  سیاسی قیادت پشاور میں موجود تھی۔

 

وزیراعظم نے کہا کہ فتہ پھیلانے والی کالعدم تنظیموں کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے، سب نےمل کرطےکیادہشت گردوں کومزیدبرداشت نہیں کیاجاسکتا، 11گھنٹےکےاجلاس کےبعدنیشنل ایکشن پلان سامنےآیا، خوشی ہےپوری قیادت دہشت گردی کےخلاف متحدہے،گزشتہ اجلاس میں جائزےکےبعد20نکاتی ایکشن پلان منظورکیاگیا، تمام سیاسی جماعتوں نےایکشن پلان کی تیاری میں بھرپورکرداراداکیا، گزشہ اجلاس میں انسداددہشت گردی قوانین سےمتعلق ترامیم پراتفاق ہوا،آئینی ترامیم کامسودہ تیارہے،کوئی ابہام نہیں ہوناچاہیے، انسداددہشت گردی کےخصوصی قوانین کی مدت 2سال ہے۔

 

وزیراعظم نے کہا کہ سب نے مل کر طے کیا ہے کہ دہشتگردی کو ختم کیا جائے گا24 دسمبر کو یہاں کا منظر دیدنی تھا،  ملک کی تمام سیاسی جماعتوں نے آئینی ترمیم اور آرمی ایکٹ میں ترمیم  پر رضا مندی ظاہر کردی ہے، یہ ترامیم دو سال کیلئے ملک میں نافذ العمل ہوں گئی، پوری قوم کی نگاہیں آج کے اجلاس پر مرکوز ہیں

آج کے اجلاس میں قومی ایکشن پلان کی سفارشات پر تفصیلی بات چیت کے بعد یہ بل پارلیمنٹ میں بھیجا جائے گا، جہاں توقع ہے کہ بغیر کسی بحث مباحثے کے یہ منظور ہوگا اور اب کسی بحث اور تعطل کی گجائش باقی نہیں رہی ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ مسودے پر حتمی فیصلہ ہو جائے، یہ ترمیم دو سال کیلئے لائی جا رہی ہے، وقت آگیا ہے کہ ملک کو دہشت گردی جیسے گند سے صاف کیا جائے، آج حتمی فیصلہ کرکے اٹھیں گے، فوج نے بھی اس اجلاس سے متعلق جی ایچ کیو میں بہت غور کیا، قومی قیادت  اس مسودے کی کاپیاں دیکھ لیں، قومی ایکشن پلان کو ایکشن میں ڈھلتا دیکھنا چاہتا ہوں۔

 

انہوں نے کہا کہ پوری قوم کی نگاہیں اس اجلاس پرمرکوزہیں، قومی قیادت نےاتفاق کیااب مزیدبرداشت نہیں کیاجائےگا، 7دن کےاندرکمیٹی نےانسداددہشت گردی کیلئےسفارشات مکمل کیں، قوم انسداددہشت گردی کےقومی لائحہ عمل پرعملدرآمدچاہتی ہے، بھرپورمشاورت کےبعدآئینی ترمیم کےحوالےسےمسودہ تیارہے، وقت آگیاہےکہ اس حوالےسےحتمی فیصلہ ہوجائے، وقت آگیاہےکہ اس حوالےسےحتمی فیصلہ ہوجائے، دہشت گردی کےخاتمےکیلئےقومی قیادت نےکمرکس لی ہے۔دہشت گردی کےخاتمےکیلئےقومی قیادت نےکمرکس لی ہے،خواہش ہےجلدایساامن قائم ہوجہاں کوئی کسی کودھمکی نہ دےسکے۔

 

آج ہونے والے اجلاس میں وزرائے اعلیٰ، گورنر، آرمی چیف، ڈی جی آئی ایس آئی، ڈی جی آئی ایس پی آر، عمران خان، آصف زرداری، فضل الرحمان اور دیگر سیاسی جماعتوں کے قائدین اور رہنماؤں نے بھی شرکت کی، پندرہ روز میں سیاسی قائدین تین  بار جمع ہوئے ہیں۔ سماء

میں

کا

کو

Nawaz Sharif

fever

promise

Tabool ads will show in this div