سردی کی شدت میں اضافے سے نمونیا کے مریضوں میں اضافہ

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/11/Peneumonia-Isb-Pkg-20-11.mp4"][/video]

اسلام آباد: سردی کی شدت میں اضافے کے ساتھ نمونیا کے مرض میں اضافہ ہونے لگا۔ پاکستان میں ہر سال بانوے ہزار سے زائد بچے نمونیا کے باعث مر جاتے ہیں۔


طبی ماہرین کے مطابق اگر بچوں میں تیز بخار، سینے میں خرخراہٹ، نزلہ، زکام اور سانس لینے میں دشواری ہو تو اسے ہلکا مت لیں بلکہ فوری ڈاکٹر سے رجوع کریں۔

ڈاکٹر ملازم کہتے ہیں کہ نمونیا ایک انفیکشن ہے لنگز کا جس میں آپ کو مختلف بیکٹیریا اور وائرسز کرواتے ہیں اور لنگز کی سوزش ہو جاتی ہے اس وجہ سے بچے کے سانس تیز ہو جاتی ہے۔ بچے کو بخار بھی ہو جاتا ہے اور تیز بخار میں جھٹکے بھی لگتے ہیں۔

ڈاکٹر رزاق سومرو کے مطابق ویکسین کا کام  صرف یہ ہوتا ہے کہ آپ کی اپنی امیونٹی یعنی بچے کی قوت مدافعت خود کو ہی ایکٹیویٹ کر رہی ہوتی ہے۔ ویکسین الگ سے ہم کچھ نہیں دے رہے ہوتے، لوگوں کو غلط فہمی ہوئی ہے کہ ویکسین لگانے سے بچے بیمار ہوتے ہیں تو ایسی کوئی بات نہیں ہے۔ سماء

HEALTH

cold Weather

Child Death

medical experts

Tabool ads will show in this div