بیان پر ندامت، نیٹو نے ترکی سے معافی کرلی

انقرہ / برسلز : نیٹو نے اتاترک اور رجب طیب اردوگان کو دشمن ظاہر کرنے پر ترکی سے معذرت کرلی ہے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق ترک میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ نیٹو سیکریٹری جنرل اسٹولن برگ نے تنازع کھڑا ہونے پر ترکی سے معافی مانگ لی ہے۔

رپورٹس کے مطابق ا ن کا کہنا ہے کہ ناروے واقعہ انفرادی عمل کا نتیجہ تھا جس کا اتحاد کے نقطہ نظرسے کوئی تعلق نہیں ،ناروے میں جس شخص نے ترک مخالف اقدام اٹھایا، وہ نیٹو کا ملازم نہیں،ترکی نیٹو کے فوجی اتحاد کا اہم حصہ ہے۔

 

واضح رہے کہ واقعہ کی شروعات اس وقت ہوئی جب، ناروے میں فوجی مشق کے دوران دشمن کی تصویر کے طور پر ترکی کے بانی قائد مصطفیٰ کمال اتاترک کی تصویر استعمال کی گئی،جس کے ردعمل میں ترکی نے مشقوں میں شریک اپنے 40 فوجیوں کو واپس بلا لیا ہے۔

ترک میڈیا کے مطابق سوشل میڈیا پر ترک صدر طیب رجب اردوگان کے نام سے ایک جعلی اکاؤنٹ سے نیٹو مخالف پیغامات بھی بھیجے گئےاور ناروے میں فوجی مشقوں کے دوران مصطفیٰ کمال اتاترک اور صدر رجب طیب اردوگان کو مبینہ طور پربطور دشمن ظاہر کیا گیا۔ سماء

APOLOGY

NATO

Tabool ads will show in this div