ذکی الرحمان لکھوی کی نظر بندی ختم کرنیکا فیصلہ کالعدم قرار

ویب ایڈیٹر:


اسلام آباد  :   سپریم کورٹ آف پاکستان نے ممبئی حملہ کیس میں شامل ذکی الرحمان لکھوی کی نظری بندی ختم کرنے کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا۔

سپریم کورٹ آف پاکستان میں ذکی الرحمان لکھوی کی نظربندی ختم کرنے کیخلاد دائر اپیل کی سماعت ہوئی، درخواست کی سماعت جسٹس جواد ایس خواجہ کی زیر صدارت دو رکنی بینچ نے کی، اس موقع پر ذکی الرحمان لکھوی کی جانب سے چوہدری افراسیاب ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے، سماعت کے آغاز میں اٹارنی جنرل آف پاکستان کا کہنا تھا کہ ہائی کورٹ نے وفاق کا مؤقف سننے بغیر رہائی کے احکامات جاری کیے۔

دوران سماعت عدالت کی جانب سے ریمارکس دیئے گئے کہ لگتا ہے ہائی کورٹ نے نظر بندی ختم کرنے کا فیصلہ عجلت میں جاری کیا، کیس میں فریقین کی جانب سے حقائق کو زیرغورنہیں لایا گیا، وفاق کو اپنا مؤقف پیش کرنے کا موقع ہی نہیں ملا، ایسی صورت میں اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ برقرار نہیں رکھا جا سکتا، سپریم کورٹ نے معاملہ دوبارہ ہائی کورٹ کو بھجوا تے ہوئے ہدایت کی کہ عدالت عالیہ میرٹ پر دلائل سننے کے بعد فیصلہ دے۔

عدالت کی جانب سے اسلام آباد ہوئی کور ذکی الرحمان لکھوی کا فیصلہ  بارہ جنوری کو سننے کی ہدایت بھی دی گئی، واضح رہے کہ ہائی کورٹ اسلام آباد نے ذکی الرحمان لکھوی کو نظر بند کرنے سے متعلق نوٹی فکیشن کو معطل کرتے ہوئے انہیں رہا کرنے کا حکم دیا تھا، تاہم وزارت داخلہ کی جانب سے رہائی کے احکامات کو سپرریم کورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا۔ سماء

فیصلہ

ahmadinejad

hub

Tabool ads will show in this div