ڈی آئی خان واقعہ؛ریحام خان کے متاثرہ لڑکی کے گھرجانے پردھمکیاں

Nov 18, 2017

 

[video width="480" height="272" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/11/reham.mp4"][/video]

سماجی کارکن اور پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کی سابقہ اہلیہ ریحام خان کے اسٹاف کو مظلوم لڑکی سے ہمدردی کے لیے اس کے گھر جانے کی پاداش میں دھمکیاں ملنے لگیں۔

دو رور قبل پی ٹی آئی چیئرمین کی سابق اہلیہ اور سماجی کارکن ریحام خان ڈی آئی خان میں سرعام برہنہ کر کے گھمائی جانے والی مظلوم لڑکی سے ملنے اس کے گھر پہنچی تھیں۔ میڈیا سے گفتگو میں ریحام خان نے خیبرپختونخواہ کی گڈ گورننس کے دعوؤں پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا تھا کہ سولہ سالہ بچی پر ظلم ہوامگر تھانے گئی تو صوبے کی مثالی پولیس کا ایس ایچ او اسے گالیاں دیتا ہے۔ ریحام نے معاملے میں پی ٹی آئی کے وزیرعلی امین گنڈا پور کا نام آنے اور ان کی جانب سے ملزمان کی پشت پناہی کیے جانے کی بھی نشاندہی کی تھی۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر ریحام خان کے اس اقدام کو خاصا سراہا گیا ،مگر ٹوئٹر صارفین کی جانب سے یہ بھی کہا گیا کہ آپ نے اچھا کام کیا مگر اب ذہنی طور پرتیاررہیں کیونکہ بے نقاب کرنے پر یہ آپ سے بدلہ لیں گے۔

جواب میں ریحام خان نے کہا کہ میرے اسٹاف کو دھمکیاں دی جا رہی ہیں ، مگر ہم صرف اللہ سے ڈرتے ہیں۔

ریحام خان سے قبل رہنما پاکستان تحریک انصاف داور کنڈی نے بھی اپنی ہی جماعت کے وزیر علی امین گنڈا پور سے وزرات لے کرسخت کارروائی کا مطالبہ کیا تھا۔

پی ٹی آئی کے ایم این اے داور کنڈی نے عمران خان کو خط لکھا جس میں کہا گیا کہ علی امین گنڈا پورکے خلاف بھرپور کارروائی کی جائے ، عمران خان ، وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا سے کہیں کہ علی امین سے وزارت واپس لے کر معاملے کی مکمل تحقیقات کرائی جائیں۔ علی امین پور نے ملوث ملزمان کی بھرپور سرپرستی کرتے ہوئے انہیں مالی مدد بھی فراہم کی۔ ان کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔

مزید پڑھیے: لڑکی کی سرعام تذلیل، پی ٹی آئی رہنما کا ساتھی کیخلاف عمران خان کو خط

داور کنڈی نے بھی متاثرہ لڑکی کے اہلخانہ سے ملاقات کی تھی جس میں اہلخانہ کی جانب سے معاملے میں علی امین گنڈا پور کے ملوث ہونے کی نشاندہی کی گئی۔

واضح رہے کہ سولہ برس کی لڑکی کو ڈیرہ اسماعیل خان کی سڑکوں پربرہنہ گھمایا گیا تھا، تھانہ چوہدوان کے ایس ایچ او نے متاثرین کا ساتھ دینے کے بجائے الٹا انہی کے خلاف مقدمہ کا ٹ دیا۔ بات وزیراعلیٰ کے نوٹس میں آئی تو جھوٹا مقدمہ ختم کراکے اصل ملزمان کی گرفتاری کا حکم دیا گیا۔

یہ پہلی بار نہیں، صاف شفاف چلنے کی دعویدار تحریک انصاف کو علی امین گنڈا پور پہلے بھی کئی کلنک کے ٹیکے لگو اچکے ہیں۔ اسلام آباد لاک ڈاؤن کے دوران علی امین گنڈا پورسے شراب کی بوتلیں برامد ہوئی تھیں۔ پولیس نے غیر قانونی اسلحہ ملنے کا بھی دعویٰ کیا تھا ۔۔ لیکن وزیر موصوف نے کہا کہ ان کی گاڑی میں شراب نہیں شہد تھا۔ اس معاملے سے تحریک انصاف کی خوب جگ ہنسائی ہوئی۔

علی امین گنڈا پورنے عید کے دوران اپنے حلقے میں ہیلی کاپٹر سے عیدی اور تحائف پھینکنے کا اعلان بھی کیا تھا جو بعد میں واپس لے لیا گیا۔ علی امین بلدیاتی انتخابات کے دوران بیلٹ باکس اٹھانے کے الزام میں خیبر پختونخوا پولیس کے ہاتھوں گرفتار بھی ہوچکے ہیں ۔ یہی نہیں، خیبرپختونخوا کے بجٹ اجلاس کے دوران اپوزیشن نے علی امین گنڈا پور پر پٹواریوں سے رشوت لینے کے الزامات بھی لگائے تھے ۔ سماء

PTI

GIRL

DERA ISMAIL KHAN

women

statement record

gandapur

Tabool ads will show in this div