پیٹرولیم بحران پر ایک اور اجلاس، وزیراعظم کا ذمہ داروں کو معاف نہ کرنیکا اعلان

Nov 30, -0001

ویب ایڈیٹر

اسلام آباد : وزیراعظم کی زیر صدارت پیٹرولیم بحران پر ایک اور اہم اجلاس جاری ہے، جس میں  وزیراعلیٰ پنجاب، وزیر خزانہ، وزیر دفاع اور دیگر حکام شریک ہیں، میاں نواز شریف نے پیٹرول کی قلت کے باعث عوام کو درپیش مشکلات پر برہمی کا اظہار کیا ہے، انہوں نے واضح کردیا کہ جو بھی ذمہ دار ہوا اسے معافی نہیں ملے گی۔

وزیراعظم نواز شریف کی زیرصدارت پیٹرولیم بحران پر ایک اور اہم اجلاس جاری ہے، اجلاس میں وزیراعلیٰ پنجاب، وزیر خزانہ، وزیر دفاع، سیکریٹری پانی و بجلی اور قائم مقام سیکریٹری پیٹرولیم بھی شریک ہیں۔

 اس موقع پر وزیراعظم نواز شریف نے پیٹرول بحران کی وجہ سے عوام کو درپیش مشکلات پر برہمی کا اظہار کیا۔

اجلاس میں عوام کو فوری ریلیف کیلئے اقدامات سے وزیراعظم کو آگاہ کیا گیا، بریفنگ میں بتایا گیا کہ آئندہ مہینوں میں پیٹرول کی اضافی سپلائی کو یقینی بنایا جائے گا، رسد میں اضافہ کردیا گیا، ملک میں آج 15 ہزار 600 ٹن پیٹرول فراہم کیا گیا، روزانہ اوسطاً 12 ہزار ٹن پیٹرول کی ڈیمانڈ ہے۔

اِس سے قبل بھی وزيراعظم کی زيرصدارت اہم بيٹھک لگی جس ميں وزراء ايک دوسرے پر پیٹرول بحران کی ذمہ داری عائد کرتے رہے، وزیراعظم نے بھی صاف کہہ ديا کہ جو بھی ذمہ دار ہوا اُسے معافی نہيں ملے گی۔

ذرائع کے مطابق وزیر پیٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے وزیراعظم کو بتایا کہ ادائیگیوں میں تاخیر کی وجہ سے پیٹرول کا مسئلہ سنگین ہوا، اس وقت پنجاب اور خیبر پختونخوا میں پیٹرول کی قلت ہے جسے دور کرنے کیلئے اقدامات کررہے ہیں، چند روز میں مسئلہ حل کرلیا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نواز شریف نے وزیر پیٹرولیم کے جواب پر عدم اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ اتنا بڑا بحران پیدا ہونا متعلقہ افراد کی نااہلی ہے، عوام کو پیٹرول کے حصول میں سخت تکلیف کا سامنا کرنا پڑرہا ہے اس کا جو بھی ذمے دار ہوا اسے معاف نہیں کیا جائے گا۔ سماء

eid

tragic

Tabool ads will show in this div