آمدنی سے زائد اثاثہ جات کیس؛ چودھری برادران کیخلاف تفتیش پھر شروع

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/10/NAB-Ch-brothers-Cases-31-10.mp4"][/video]

لاہور: چودھري برادران کے خلاف آمدني سے زائد اثاثہ جات کا کيس نيب نے سترہ سال بعد دوبارہ تفتيش شروع کر دي۔

ذرائع کے مطابق سال اپريل 2000 ميں چودھري پرويز الٰہي اور شجاعت حسين کے خلاف نيب کي جانب سے آمدن سے زائد دو ارب بياليس کروڑ روپے کرپشن کا کيس بنايا گيا تھا جس کو بعد ميں پرويز مشرف کے ساتھ حکومت ميں شامل ہونے پر کھٹائي ميں ڈال ديا گيا تھا، ليکن کيس کو بند نہيں کيا گيا تھا۔

تاہم اب ايک بار پھر نئے چيرمين نيب کے حکم پر چودھري برادران کے خلاف کيس پر دوبارہ تفتيش شروع کر دي گئي ہے، نيب کے آفيشل ريکارڈ کے مطابق سترہ سال سے اس کيس پر انويسٹيگيشن ہو رہي ہے اور اسکو بند نہيں کيا گيا۔

دوسري جانب اب نيب کي جانب سے نئے چيرمين کي تقرري کے بعد ايک بار پھر چودھري برادران کو نوٹس جاري کےنے کا فيصلہ کيا گيا ہے۔اس حوالے سے چودھري برادران کے ترجمان کا کہنا ہے کہ نيب کي جانب سے ابھي تک کوئي نوٹس موصول نہيں ہوا، جب بھي نيب طلب کرے گا وہ ضرور پيش ہوں گے۔ سماء

PUNJAB

PML Q

NAB investigation

Chaudrhy brothers

Tabool ads will show in this div