بے بس بھارت نے پھر پاکستان کی منت سماجت شروع کردی

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/10/NF-SUSHMA-SWARAJ-MEETING-PKG-ASIF-21-10.mp4"][/video]

نئی دہلی : کلبھوشن معاملے ميں بھارت کي بے بسي پھر سامنے آگئي۔ وزيرخارجہ سشما سوراج نے پاکستاني ہائي کمشنرسہيل محمود سے ملاقات کي اور درخواست کي کہ کلبھوشن کے بارے ميں از سر نوجائزہ لے۔

بھارت پھر بے بس ہوگيا، دہشت گرد کلبھوشن کو بچانے کي ايک اور کوشش کر ڈالي۔ وزير خارجہ سشما سوراج نے پاکستاني ہائي کمشنر سہيل محمود سے ملاقات کي۔

ملاقات میں ششما نے درخواست کرتے ہوئے کہا ہے کہ کلبھوشن معاملے پر ازسر نو غور کي ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ دوطرفہ تعلقات ميں پيشرفت کا انحصاراس پر ہے کہ کلبھوشن پر سے سارے الزامات ختم کرديے جائيں اور بھارت واپس بھيج ديا جائے۔

سشما سوراج نے کلبھوشن کي والدہ کيلئے پاکستان آنے اور بيٹے سے ملنے کي اجازت بھي مانگي۔ سشما سوراج نے ديگر دو طرفہ مسائل پر بھي گفت گو کي۔ سہیل محمود گزشتہ ماہ بھارت ميں پاکستان کے نئے ہائي کمشنر مقرر ہوئے ہيں، اور کسی بھی اعلیٰ بھارتی عہدے دار سے یہ ان کی پہلی ملاقات ہے۔

بھارتی اخبار کے مطابق بھارت میں پاکستان کے ہائی کمشنر سہیل محمود بھارتی مشیر قومی سلامتی اجیت دوال اور سیکریٹری خارجہ جے شنکر سے چند روز میں ملاقات کریں گے۔

واضح رہے کہ پاکستان کی جانب سے جاسوس کلبھوشن یادیو کو سزائے موت دینے کے خلاف بھارت نے عالمی عدالت انصاف سے رجوع کرتے ہوئے پاکستان پر ویانا کنونشن کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا تھا۔

عالمی عدالت انصاف میں 15 مئی کو سماعت میں پاکستان نے کلبھوشن کیس سے متعلق عالمی عدالت کے دائرہ کار کو چیلنج کیا جب کہ بھارت نے کلبھوشن کی پھانسی رکوانے کی درخواست کی تھی۔ عالمی عدالت انصاف نے 18 مئی کو بھارتی خفیہ ایجنسی ’’را‘‘ کے جاسوس کلبھوشن یادیو کی سزائے موت کے معاملے پر حکم امتناع جاری کیا تھا۔ سماء

Pakistani High Commission

KULBHUSHAN JADHAV

sushma sawaj

Sohail mehmood

Tabool ads will show in this div