پبلک سروس کمیشن خيبر پختونخوا کی رپورٹ نے معیار تعلیم کا پول کھول دیا

پشاور: پبلک سروس کمیشن خيبر پختونخوا کی رپورٹ نے صوبے ميں معیار تعلیم کا پول کھول ديا۔ سالانہ رپورٹ میں انٹرويوز کے دوران امیدواروں کے دلچسپ جوابات سامنے آئے۔


پبلک سروس کميش خيبرپختونخوا کي رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال مقابلے کے صوبائي امتحانات ميں ايک ہزار سے زائد اميدواروں نے حصہ ليا جن ميں سينتاليس نے کاميابي حاصل کي۔

رپورٹ  کے مطابق تین ڈگریاں رکھنے والے اميدوار نے انٹرويو کے دوران بتايا کہ سینٹ ارکان کی تعداد 114 ہے جب کہ ایم اے سیاسیات کا گولڈ میڈل یافتہ طالبعلم اسٹالن سے ناواقف نکلا۔

ایم فل ہسٹری کے امیدوار نے جواب ديا کہ شیرشاہ سوری ہندوستانی فاتح تھا۔ اسي طرح ایم اے انگلش کا طالب علم ناول کی تعریف سے قاصر تھا اور پاک اسٹڈی کا طالب علم پاکستان کے نقشے سے بے خبر پايا گيا۔

سالنہ رپورٹ ميں پبلک سروس کمیشن نے صوبے ميں اساتذہ اور معیار تعلیم بہتر بنانے کی سفارش بھي کي ہے۔ سماء

public service commission

Khyber Pakhtunkhawa

Tabool ads will show in this div