وزیراعظم کا مختلف ترقیاتی منصوبوں پر پیش رفت کا جائزہ

کراچی: وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے گورنر ہاﺅس میں منعقدہ اجلاس کی صدارت کی اور مختلف ترقیاتی منصوبوں پر پیش رفت کا جائزہ لیا۔ وزیراعظم کو کراچی میں وفاقی حکومت کے فنڈز سے جاری منصوبوں اور شہر کے بنیادی ڈھانچے کی ترقی کےلئے ضروری منصوبوں پر بریفنگ دی گئی۔

اس موقع پر ملک میں تجارت و کاروبار کی ترقی اور فروغ کےلئے کراچی سے ملک کے دیگر شہروں کو سامان کی ترسیل اور مسافروں کی آمدورفت کے حوالے سے بھی مختلف منصوبوں کا خصوصی جائزہ لیا گیا۔ وزیراعظم کو بتایا گیا کہ لیاری ایکسپریس وے کا 97 فیصد کام مکمل ہو چکا ہے اور اس کا شمالی حصہ رواں سال کے آخر تک مکمل طور پر آپریشنل ہو جائے گا۔ کے فور منصوبہ کے حوالے سے بتایا گیا کہ منصوبہ کا پہلا فیز اگلے سال تک مکمل کر لیا جائے گا۔

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ہدایت کی کہ عوامی فلاح و بہبود کے منصوبے کے بقیہ فیزز کے حوالے سے تمام شراکت داروں سے بھرپور مشاورت کی جائے۔ وفاقی حکومت منصوبہ کےلئے فنڈز فراہم کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ منصوبہ کی تکمیل میں حائل رکاوٹوں کو باہمی اشتراک کار سے دور کیا جائے۔

اجلاس کو یہ بھی بتایا گیا کہ گرین لائن بس کا منصوبہ جو مکمل طور پر وفاقی حکومت کے فنڈز سے مکمل کیا جا رہا ہے۔ اس منصوبہ کو عوام کی سفری سہولتوں کے پیش نظر مکمل کیا جا رہا ہے اور منصوبہ رواں مالی سال کے اختتام تک مکمل کر لیا جائے گا۔ وزیراعظم نے کراچی میں ٹرانسپورٹ کے اہم انفراسٹرکچر کے منصوبوں کے حوالے سے کہا کہ تمام شراکت دار اس حوالے ایکشن پلان مرتب کریں۔ انہوں نے کہا کہ مقامی، صوبائی اور وفاقی حکومتوں کے متعلقہ حکام باہمی مشاورت سے لائحہ عمل مرتب کریں۔

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے شہر اور بندرگاہ پر ماحولیاتی مسائل پر گہری تشویش کا اظہار کیا۔ وزیراعظم نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ ماحولیاتی آلودگی کے مسائل کے جلد از جلد خاتمہ کےلئے حکمت عملی مرتب کی جائے اور اس پر فی الفور عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔

اجلاس میں گورنر سندھ محمد زبیر، وفاقی وزیر برائے پورٹس اینڈ شپنگ (سمندری امور) پیر حاصل بزنجو، بندرگاہوں کے وزیر مملکت چوہدری جعفر اقبال، میئر کراچی وسیم اختر، چیف سیکرٹری سندھ، چیئرمین کے پی ٹی، چیئرمین پورٹ قاسم اتھارٹی اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ اے پی پی

governor house

Tabool ads will show in this div