احتساب عدالت میں ہلڑ بازی کی اندرونی کہانی

اسلام آباد:جوڈیشل کملیکس کی نیب عدالت میں نوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن صفدر پرفرد جرم عائد کرنے کی کارروائی بغیر سماعت کے ملتوی کردی گئی ۔ سماعت عدالتی کمرے میں وکلاء کی جانب سے بدمزگی، ہلڑبازی اور جھگڑے کے باعث ملتوی کی گئی۔

احتساب عدالت میں آج ممکنہ طورپرنوازشریف،مریم نوازاورکیپٹن صفدرپرفرد جرم عائد کی جانی تھی لیکن کیپٹن صفدر کے داخل ہوتے ہی کمرہ عدالت میں بدمزدگی شروع ہوئی، وکلا بھی زبردستی کمرہ عدالت میں داخل ہو گئے۔

بدمزگی کی وجہ صدرن لیگ لائرزونگ پنجاب صدیق اعوان کانیب پراسیکیوٹرسے جھگڑابنی۔ جھگڑے کے دوران صدیق اعوان نے نیب پراسیکیوٹرکودھکے بھی دیے۔ سماعت کے آغاز پر ہی وکلاء نے جج سے مطالبہ کرڈالا کہ کارروائی نہیں چلنےدیں گے،ایف آئی آردرج کی جائے۔ جہانگیر ایڈووکیٹ نے کہا کہ تشدد ہوا ہے، ہم کارروائی کا بائیکاٹ کریں گے۔

مریم نوازکے آتے ہی مزید وکلا کمرہ عدالت میں داخل ہوئے اور وکلا نے کیپٹن صفدراورمریم نواز کے سامنے شکایات کے انبارلگادیے۔ بدمزگی بڑھنے پرجج کمرہ عدالت سے فوری اٹھ کر چلے گئے اورمقدمے کا ریکارڈ فوری چیمبر میں منتقل کروا دیا۔

جج کے اٹھ کرجانے کے بعد عدالتی عملے نے سماعت 19 اکتوبر تک ملتوی ہونے کا بتایا جس کے بعد کیپٹن صفدر اور مریم نوازچلےگئے۔

جج نے معاملے سے متعلق نعیم گجر ایڈووکیٹ کی درخواست پرانکوائری کاحکم کا دیتے ہوئے درخواست آئی جی کو بھجوا دی۔ سماء

MARYAM NAWAZ

judicial complex

CAPTAIN SAFDAR

lawyers protest

Tabool ads will show in this div