سوشل میڈیا پر قتل کے فتوے دینے والوں کیخلاف کارروائی کا اعلان

اسلام آباد: وزیر داخلہ احسن اقبال کا قومی اسمبلی میں اظہار خیال کے دوران کہنا تھا کہ گلی گلی اگر ملک میں فتوی جاری یوئے تو یہاں میدان جنگ بن جائے گا، گلی گلی کافر قرار دینے کے فتوے دینا ہمارا کام نہیں، جہاد کا اعلان کسی فرد واحد نہیں ریاست کا کام کام ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ دشمن چاہتا ہے کہ مسلمان کو مسلمان سے لڑایا جائے۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کے دوران وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے اپنے ردعمل میں کہا کہ کچھ عرصے سے نفرت کی بنیاد پر فتوے لگائے جا رہے ہیں، سوشل میڈیا پر جس کا دل چاہتا ہے فتوے جاری کرتا ہے،اسلام آباد:کسی کو سزا دینا ریاست کا کام ہے،گلی گلی فتویٰ جاری نہیں ہوسکتا،  گلی گلی اگر ملک میں فتوی جاری یوئے تو یہاں میدان جنگ بن جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ جہاد کا اعلان کسی فرد واحد کا کام نہیں، جہاد کا اعلان کرنا رياست کا حق ہے، ایسا کرنے سے ملکي اور قومي سلامتي کو خطرات لاحق ہوسکتے ہيں، ہمارا ايمان اللہ اور اس کے رسولﷺپر ہے، کسي کو کسي پر انگلي اٹھانے کا حق نہيں پہنچتا۔

علامہ کرام سے اپیل کرتے ہوئے وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ مذہبی قیادت آگے بڑھ کر منفی رجحانات  کی بیچ کنی کرے، دشمن ہمیں آپس میں لڑانا چاہتا ہے، کسی کا قتل واجب یا غیر واجب ہونے کا فیصلہ تعزیرات پاکستان کے تحت ہونا ہے، حلف لینے کے بعد کسی پر کفرٰ کا فتویٰ جائز نہیں، یہ اللہ اور انسان کا معاملہ ہے۔ سماء

INTERIOR MINISTER

PEMRA

parliamentarian

OATH

DG IB

Fatwa

Tabool ads will show in this div