لاس ویگاس فائرنگ؛حملہ آورکون تھا؟

لاس ویگاس:امریکی ریاست لاس ویگاس میں کنسرٹ پراندھا دھند فائرنگ کرنے والے ملزم سے متعلق اہم حقائق سامنے آ گئے۔ اسٹیفن پیڈک پولیس کی جوابی فائرنگ میں مارا گیا تھا۔

ہوٹل کی 32 ویں منزل پرواقع کمرے کی کھڑکی سے ہزاروں افراد کے ہجوم پر فائرنگ کرنے والا سٹیفن پیڈک سابق اکاؤنٹنٹ تھا اور ریٹائرمنٹ کے بعد ویران جگہ پررہائش پذیر تھا۔ حکام کے مطابق ملزم کے پاس پائلٹ اورشکارکرنے کا لائسنس تھالیکن وہ کسی مجرمانہ ریکارڈ کا حامل نہیں تھا۔ امریکی میڈیا کے مطابق مینڈیلے بے نامی ہوٹل کی 32 ویں منزل پر واقع کمرے میں سٹیفن پیڈک نے جمعرات کی رات چیک ان کیا تھا، اسی کمرے کی کھڑکی سے ہزاروں لوگوں پر فائرنگ کی گئی۔ کمرے سے سے 19 رائفلوں سمیت ہزاروں گولیاں برآمد ہوئی ہیں۔

پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ ملزم کاگھر اچھا اور صاف ہے جہاں وہ اپنی 62 سالہ خاتون دوست ماریلو ڈینیللے کے ساتھ رہائش پزیرتھا لیکن پیڈک کی دوست امریکہ سے باہرہے۔غالب امکان ہے کہ اسٹیفن پیڈک نفسیاتی مسائل کا شکار تھا۔

ملزم کے بھائی نے میڈیا کو بتایا کہ ہمارے والد ایک بینک رابر تھے۔ وہ ایف بی آئی کی سب سے زیادہ مطلوب فہرست میں تھے اور ایک بار جیل سے بھی بھاگ گئے تھے۔ اسٹیفن پیڈک کے مبینہ طور پر اس واقعے میں ملوث ہونے کے بعد سے ہمارا خاندان سکتے میں ہے۔ دوسرے بھائی بروس پیڈک کے مطابق اسٹیفن کا بھائی ملٹی ملین پراپرٹی سرمایہ کار تھا۔

اسٹیفن کے پڑوسیوں نے میڈیا کو بتایا کہ وہ اور اسکی خاتون دوست ہمیشہ گھر میں بند ہو کر رہتے تھے۔اسٹیفن ایک پیشہ ورجواری اورعجیب سا انسان تھا۔

واضح رہے کہ مقامی میڈیا کے مطابق امریکی ریاست نیواڈا کے شہر لاس ویگاس کی ساحلی پٹی میں روایتی میوزک میلہ روٹ 91 ہارویسٹ فیسٹیول جاری تھا کہ اسٹیفن پیڈک نامی مسلح شخص نے ہوٹل کی 32 ویں منزل پرواقع اپنے کمرے کی کھڑکی سے نیچے موجود ہزاروں افراد کے ہجوم پر اندھا دھند فائرنگ کردی۔ واقعے میں ہلاک افراد کی تعداد 59 ہو چکی ہے جبکہ 500 سے زائد افراد زخمی ہیں۔ پولیس کی جوابی فائرنگ میں حملہ آور بھی مارا گیا۔ سماء

USA

Route 91 Harvest country music festival

mass shooting in modern American history

Tabool ads will show in this div