لاس ویگاس فائرنگ، ہلاکتوں کی تعداد 58 ہوگئی، 500  سے زائد زخمی

  

 لاس ویگاس : امریکی شہر لاس ویگاس میں میوزک کنسرٹ کے دوران فائرنگ سے ہلاکتوں کی تعداد 58 ہوگئی، 500 سے زائد افراد زخمی ہیں، کئی کی حالت تشویشناک ہے، ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق امریکی ریاست نیواڈا کے شہر لاس ویگاس کی ساحلی پٹی میں روایتی میوزک میلہ روٹ 91 ہارویسٹ فیسٹیول جاری تھا کہ ایک مسلح شخص نے ہوٹل کی 32 ویں منزل سے اپنے کمرے کی کھڑکی سے نیچے ہزاروں افراد کے ہجوم پر اندھا دھند فائرنگ کردی، گولیاں لگنے سے 58 افراد ہلاک اور 500 سے زائد زخمی ہوگئے، پولیس کی جوابی فائرنگ میں حملہ آور بھی مارا گیا۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ نعشوں اور زخمیوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے، جہاں کئی زخمیوں کی حالت تشویش ناک ہے، اور ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔

دوسری جانب حکام نے شہر میں سیکیورٹی بڑھادی ہے جبکہ لاس ویگاس ایئر پورٹ اور ہوٹلز کو بند کرتے ہوئے پروازوں کا رخ بھی موڑ دیا گیا ہے، مقامی پولیس کے مطابق حملہ آور اسی علاقے کا رہائشی تھا، جس کی عمر 64 سال تھی، اس کی شناخت اسٹیفن پیڈوک کے نام سے ہوئی ہے۔

پولیس کو ہوٹل کے کمرے سے مختلف ہتھیار ملے ہیں جبکہ اسٹیفن کی ایشیائی نژاد خاتون ساتھی ماریلو ڈینلی کی تلاش جارہی ہے۔ تازہ اطلاعات کے مطابق آئی ایس آئی ایس (داعش) نے واقعے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ سماء / ویب ڈیسک

USA

Route 91 Harvest country music festival

mass shooting in modern American history

Tabool ads will show in this div