آئین میں 22ویں ترمیم نہیں ہونے دینگے، زرداری اور فضل الرحمان کا اعلان

رپورٹ

اسلام آباد : آئين ميں 22ويں ترميم نہيں ہونے ديں گے، آصف زرداری اور فضل الرحمان نے ہاتھ ملالئے، سابق صدر کہتے ہيں ترميم کے بہانے کل تک سڑکوں پر شور مچانے والے اب پارليمنٹ ميں آنا چاہتے ہيں۔

سونامی کو پارليمنٹ ميں روکنے کی تیاری کرلی گئی، پيپلز پارٹی اور حکومتی اتحادی ايک ہوگئے، پارليمنٹ لاجز ميں مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کے بعد سابق صدر آصف زرداری نے 22ويں ترميم کی مخالفت کی وجہ بتادی۔

آصف زرداری کہتے ہيں کہ عام انتخابات بھی تحفظات کے ساتھ قبول کئے، اب بھی جمہوريت کيلئے نواز شريف کے ساتھ ہيں ليکن ساتھ ہی وائٹ پيپر لانے کا اعلان بھی کرديا۔

پی پی رہنماء کا کہنا تھا کہ تھرڈ پاور پر بڑی ذمہ داری ہے، جمہوريت اور پاکستان کے استحکام کيلئے سب کو کردار ادا کرنا ہوگا۔ سماء

tragic

law

promise

Tabool ads will show in this div