عمر اکمل اور مکی آرتھر میں کون حق پر؟

 ۔۔۔۔۔**  تحریر : ظہیر احمد  **۔۔۔۔۔

پاکستانی کرکٹر عمر اکمل نے گزشتہ روز اچانک میڈیا پر آکر قومی ٹیم کے کوچ مکی آرتھر پر الزامات لگانا شروع کر دیئے ہیں کہ ان کو ڈانٹا اور گالیاں دیں، ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ یہ سب کچھ ٹیم کے سلیکٹرز انضمام الحق اور مشتاق احمد کے سامنے ہوا، عمر اکمل کو فٹنس ٹیسٹ میں ناکامی پر چیمپئنز ٹرافی کے دوران انگلینڈ سے واپس بھیج دیا گیا تھا، یہ پہلی بار نہیں جب عمر اکمل کسی تنازع کی وجہ سے خبروں کی زینت بنے ہوئے ہیں بلکہ پہلے بھی وہ ٹریفک معاملات، گاڑی کی نمبر پلیٹ نہ ہونا، اوور اسپیڈ یا وارڈن سے بدتمیزی اور ڈانس کی وجہ سے خبروں میں رہے ہیں۔

 مکی آرتھر کے معاملے میں سابق ٹیسٹ کرکٹرز وسیم اکرم، رمیض راجہ، محمد یوسف، وقار یونس، سکندر بخت سبھی کا کہنا ہے کہ اگر کوئی مسئلہ تھا تو کرکٹ بورڈ کو بتانا چاہئے تھا، نہ کہ میڈیا پر آکر کوچ کیخلاف الزام تراشی شروع کردی جائے۔ مشتاق احمد اور انضمام نے تو کمیٹی کے سامنے اپنے بیان میں نوجوان بلے باز کے اس الزام کی تردید کردی کہ کوچ مکی آرتھر نے گالی دی، ہاں ڈانٹ ڈپٹ ضرور ہوئی ہے، تو کیا کوچ ڈانٹ ڈپٹ بھی نہیں کرسکتا، کیا کوچ کا کام منت سماجت کرکے کام کروانا ہوتا ہے اور وہ بھی عمر اکمل جیسے کھلاڑی کے ساتھ جن کی کارکردگی سب کے سامنے ہے، انہیں اتنے مواقع دیئے گئے مگر کوئی اچھی اننگز نہ کھیل پائے، جن کے کریڈٹ پر سنچری، نصف سنچری یا چھکوں چوکوں سے زیادہ قانون کی خلاف ورزی، ڈانس یا دوسرے کھلاڑیوں کی شکایات کرنا ہیں۔ وسیم اکرم کا کہنا بلکل درست ہے کہ کھلاڑی سے زیادہ اس کا بلا بولنا چاہئے اور بالفرض کارکردگی اچھی بھی ہو، کیا اچھی کارکردگی کی وجہ سے ڈسپلن کی خلاف ورزی کو برداشت کرلیا جائے ہرگز نہیں، عمر اکمل جیسے کھلاڑی کو ڈسپلن میں لانا بہت ضروری ہے جو دورسرے کھلاڑیوں کیلئے مثال ہو کہ ڈسپلن کی خلاف ورزی کسی صورت برداشت نہیں ہوگی۔

وقار یونس سے لڑائی کرنے والے، بیٹنگ آرڈر تبدیل کرنے کی شکایت عمران خان سے کرنے والے، محمد یوسف اور دوسرے کھلاڑیوں سے لڑائی کرنے والے، آئے روز نت نئے اسکینڈل میں ملوث اور سب سے بڑھ کر خراب کارکردگی والے اور ڈسپلن کی خلاف ورزی کرنے والے عمر اکمل کی باتوں پر یقین کرلیا جائے اس کوچ کیخلاف جس نے چیمپئنز ٹرافی جتوانے میں اہم کردار ادا کیا ہو، اس کوچ کیخلاف جو کھلاڑیوں کو ڈسپلن میں لانے کی کوشش کررہا ہو، اس کوچ کیخلاف جس نے نئے کھلاڑیوں کی کارکردگی کو نکھارا ہو، اس کوچ کیخلاف جو آنے والے ورلڈکپ کی تیاری میں مصروف ہو۔

عمر اکمل صاحب ٹیم آپ کے بغیر ٹرافی جیت کر آئی ہے اور مزید ٹرافیاں بھی جیت سکتی ہے، آپ ٹیم کیلئے ناگزیر نہیں ہیں بلکہ ہوسکتا ہے آپ کو دوبارہ سے موقع ملنے کی صورت میں ٹیم کو فخر زمان یا اظہر علی جیسے دوسرے اچھے کھلاڑیوں سے محروم ہونا پڑے لہٰذا ٹیم پر مہربانی کریں، اگر خود کو ٹھیک نہیں کرسکتے تو ٹیم کو ہی ٹھیک رہنے دیں۔ کرکٹ بورڈ کو بھی یہ معاملی سنجیدگی سے لینا چاہئے اور دیکھنا چاہئے کہ کہیں عمر اکمل کے پیچھے کوئی اور تو نہیں جو کرکٹر کی آڑ میں مکی آرتھر کو ہٹانا چاہتا ہو کیونکہ ایسی سیاستیں کرکٹ کا حصہ ہیں اور رہی ہیں۔

MICKEY ARTHUR

Batting Coach

Tabool ads will show in this div