پاکستان میں نئے صوبوں کے قیام سےمتعلق نئی بحث کاآغاز

اسٹاف رپورٹر

اسلام آباد: ملک میں نئے صبوبوں کے قیام سے متعلق نئی بحث کا آغاز ہو چکا ہے۔ وفاقی وزیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ نئے صوبوں کے قیام سے وفاق مضبوط ہوگا۔

بحث سے متعلق  وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کا کہنا تھا کہ نئےصوبے لسانی نہیں بلکہ انتظامی بنیاد پربننے چاہیئں۔ صوبوں کے قیام سے متعلق ملک کی دونوں بڑی جماعتوں پیپلزپارٹی اور نواز لیگ میں سرد جنگ شروع ہو چکی ہے۔

مسلم لیگ نواز کو ماضی میں بھی ہزارہ صوبے کے قیام سے متعلق تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ شاید یہ ہی وجہ ہے کہ وہ کھلے عام نئے صوبوں کی مخالفت نہیں کر رہی ہے۔ سیاسی جماعتیں اس معاملے پر بھی اپنی سیاست چمکا رہی ہیں۔

دوسری جانب مسلم لیگ ق کی جانب سے بھی بئے صوبے کے قیام کا مطالبہ سامنے آیا ہے اور ق لیگ نے سرائیکی صوبے کے قیام کا مطالبہ کردیا ہے۔ مسلم لیگ نواز کے سینیر رہنما جاوید ہاشمی کا کہنا ہے کہ نئے صوبوں کے قیام کیلئے مسلم لیگ نواز کو آگے بڑھ کر پہل کرنی ہوگی۔


دوسری جانب پنجاب اسمبلي ميں نئے صوبے سے متعلق مسلم ليگ قاف کي قرارداد پر اعتراض لگا کر اُسے آئين سے متصادم قرار دے ديا گيا ہے۔ قرارداد واپس کرنے سے متعلق حتمی فیصلہ اسپیکر پنجاب اسمبلی  کریں گے۔ نئے صوبوں کے قیام سے متعلق مسلم لیگ ن کی کمیٹی نے اپنی تجاويز نواز شريف کو پیش کردی ہیں۔ جن پر غور کیلئے پير کو اسلام آباد میں پارٹی کا اجلاس طلب کیا گیا ہے۔  سماء

میں

کے

parade

comedian

Tabool ads will show in this div