پاکستان اور مالدیپ کے درمیان بزنس ٹو بزنس روابط ہیں

sartaj

مالے: پاکستان اور مالدیپ نے سارک سربراہ اجلاس اسلام آباد میں دوبارہ بلانے پر اتفاق کر لیا ہے۔

مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے کہا کہ مالدیپ کے صدر عبداللہ یامین عبدالقیوم نے سارک اجلاس پاکستان میں دوبارہ منعقد کرنے کی بات کی ہے جو ملک کیلئے خوش آئند پیغام ہے۔

انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے رہنماوں نے سارک کے مسقبل کے بارے میں بات چیت کی اور سارک کو فعال تنظیم بنانے کی غرض سے ملکر کام کرنے پر اتفاق کیا۔سرتاج عزیز نے کہا کہ گزشتہ سال بھارت نے سارک سربراہ اجلاس کے اسلام آباد میں انعقاد کی مخالفت کی تھی لیکن مالدیپ نے انکی حمایت نہیں کی تھی اور سارک سربراہ اجلاس اسلام آباد میں منعقد کرنے کیلئے مکمل تعاون فراہم کیا تھا۔

مشیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان اور مالدیپ کے درمیان بزنس ٹو بزنس روابط ہیں اورجوائنٹ بزنس کمیٹی اور بزنس کونسل کے قیام سے دونوں ملکوں کے مابین تجارتی اور سرمایہ کاری کی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا۔

سرتاج عزیز نے کہا کہ مالدیپ میں ایک تہائی ڈاکٹرز پاکستانی ہیں اور وزیر اعظم نواز شریف نے مالدیپ میں میڈیکل کالج کے قیام اور تعمیر کیلئے پانچ ملین ڈالر کی منظوری دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے مالدیپ کے طلباءکیلئے پیشہ ورانہ اداروں میں نشستوں میں بھی اضافہ کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے مابین دفاعی شعبہ میں تعاون پر بھی بات ہوئی ہے جبکہ پاکستان مالدیپ کو پائلٹون کی تربیت کیلئے دو تربیتی طیارے فراہم کریگا۔

سرتاج عزیز نے کہا کہ مالدیپ بہت تیزی سے ترقی پر گامزن ہے اور دنیا کے 100بہترین ریزورٹ میں سے 10مالدیپ میں ہیں۔ سماء

FO

sartaj aziz

Tabool ads will show in this div