پاناما کیس کا فیصلہ کب؟ججزکے آئندہ ہفتے کا روسٹرجاری

Jul 27, 2017

Judges Reamrks Panama Case Isb Pkg 17-07

اسلام آباد:سپریم کورٹ کے ججز کا آئندہ ہفتے کاروسٹرجاری ہونے کے بعد نئی بحث چھڑگئی۔ پوری قوم کی نگاہیں سپریم کورٹ کی جانب لگی ہیں کہ پاناما جیسے بڑے کیس کا فیصلہ کب آئے گا۔ سپریم کورٹ کےججز کےآئندہ ہفتے کاروسٹرجاری کردیا گیا ہے جس کے مطابق پاناما عملدرآمد کیس کی سماعت کرنے والے بینچ کے3 میں سے 2 ججز 11 اگست تک اسلام آباد میں دستیاب نہیں ہوں گے۔

روسٹر کے مطابق جسٹس اعجاز الاحسن آئندہ ہفتے سے چھٹیوں پر ہونگے اور جسٹس عظمت سعید شیخ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں کیس سنیں گے۔ پاناما عملدرآمد بینچ میں شامل جسٹس اعجاز الاحسن گیارہ اگست تک چھٹیوں پرہوں گے ،جسٹس شیخ عظمت لاہور رجسٹری میں مقدمات کی سماعت کریں گے جبکہ جسٹس اعجاز افضل خان اسلام آباد میں مقدمات کی سماعت کریں ۔

ججزکا روسٹر آنے کے بعد قانونی ماہرین میں نئی بحث چھڑ گئی،سب کی نگاہی سپریم کورٹ کی جانب لگی ہیں کہ کیا نامکمل بنچ کے سبب فیصلہ مزید تاخیر سے آئے گا؟ ۔

سینیئر قانون دان اکرام چوہدری کہتے ہیں عدالت کی کاز لسٹ آج شام بھی آسکتی ہے اور کل صبح بھی۔ عام طور پر پریکٹس یہی ہے کہ پورا بنچ فیصلے پر ایک ساتھ دستخط کرتا ہے اور ایک ساتھ ہی سناتا ہے۔ جے آئی ٹی کی تشکیل پر پانچ ججز کے دستخط تھے تو اس کی فائنڈنگ کے فیصلے پر بھی انہی پانچوں کے دستخط ہونے چاہئیں۔ لگتا یہی ہے کہ فیصلہ چودہ اگست سے بھی آگے جاسکتا ہے۔

سپریم کورٹ کے ہی ایڈووکیٹ اور سینیئر قانون دان شعیب شاہین کہتے ہیں کہ پاناما کا معاملہ انتہائی اہم ہے۔ فیصلہ کل تک متوقع ہے۔ ضروری نہیں کہ پورا بنچ فیصلہ سنائے۔ اگر تمام ججز نے دستخط کرلیے ہیں تو کوئی بھی بنچ فیصلہ سنا سکتا ہے۔

بابر اعوان کہنا ہے کہ کل پاناما کا فیصلہ سنایا جاسکتا ہے، سپریم کورٹ ہفتے کو بھی کھلا ہوا ہوتا ہے۔ پاناما کیس کے فیصلے میں کوئی تاخیر نہیں دیکھ رہا۔سماء

PM Nawaz Sharif

panama case

panama decision

judges roster

Tabool ads will show in this div