پیمرا کیجانب سے تقریر کانامکمل متن جمع کرانے پر ججز برہم

NIHAL OPP REAX PKG 31-05 اسلام آباد : نہال ہاشمی کی دھمکی آمیز تقریر پر سپریم کورٹ میں کیس کی سماعت ہوئی، پیمرا کی جانب سے عدالت میں تقریر کا نامکمل متن جمع کرانے پر ججز برہم ہوگئے، جسٹس شیخ عظمت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ توہین آمیز کی جگہ ڈاٹ ڈاٹ کیوں لکھا؟ ڈی جی صاحب وضاحت یہاں کریں گے یا اڈیالہ جیل میں؟ججز کا کہنا تھا کہ اٹارنی جنرل اور گواہ دونوں کو نتائج بھگتنا ہوں گے۔ دھمکی آمیز تقریر سے متعلق نہال ہاشمی ازخود نوٹس کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں ہوئی، جسٹس اعجاز کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔ سماعت میں ادھورا متن فراہم کرنے پر سپریم کورٹ نے برہمی کا اظہار کیا، جسٹس شیخ عظمت سعید نے ڈی جی پیمرا سے استفسار کیا توہین آمیز کی جگہ ڈاٹ ڈاٹ کیوں لکھا؟  ڈی جی صاحب وضاحت یہاں کریں گے یا اڈیالہ جیل میں؟۔ جسٹس شیخ عظمت نے کہا اٹارنی جنرل صاحب عدالت کو چکر نہ دیں، سجھ رہے ہیں کیا ہو رہا ہے، عدالت کی آبزرویشن پر اٹارنی جنرل ناراض ہو کر بیٹھ گئے۔ نہال ہاشمی کے وکیل حشمت حبیب نے دلائل دیئے کہ عمران خان کی وجہ سے یہ سب ہوا ہے، جسٹس اعجاز الاحسن نے استفسار کیا کہ عمران خان کا کیس سے کیا تعلق ہے؟۔ حشمت حبیب نے بتایا دفاع کیلئے لوگوں کو کراچی سے لانا ہے کہ خرچہ کون اٹھائے گا، جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا مہنگائی اور اخراجات عدالت کا مسئلہ نہیں ہے۔ عدالت نے حشمت حبیب کو دو ہفتوں میں اضافی جواب جمع کرانے کی ہدایت کر دی، گواہوں کی فہرست بھی پیش کرنے کا حکم دے دیا۔ سماعت 21 اگست تک ملتوی کر دی گئی۔ سماء

JIT

PEMRA

ATTORNEY GENERAL

Nihal Hashmi

panama case

contempt court

Tabool ads will show in this div