لیگی رہنماؤں کی عمران خان اور جے آئی ٹی پر گولہ باری

Daniyal Aqama Sot 23-07

اسلام آباد : حکومتی رہنماؤں نے ایک بار پھر عمران خان پر گولہ باری کردی، طارق فضل چوہدری کہتے ہیں جو کچھ عمران خان کے ساتھ ہورہا ہے یہ مکافات عمل ہے، عمران خان کی آف شور کمپنی حلال، نواز شريف کی حرام، وہ پارليمنٹ کی بے توقيری کرتے ہیں۔ دانیال عزیز بولے کہ عمران خان کا نام الزام خان درست رکھا گیا، سپریم کورٹ اور الیکشن کمیشن سے کوئی چیز چھپی ہوئی نہیں، اقامہ کا معاملہ درست نکلا، جے آئی ٹی نے گمراہ کرنے کی کوشش کی۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنماء طارق فضل چوہدری اور دانیال عزیز کو اس وقت شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا جب صحافیوں نے پمز میں خاتون صحافی سے بدتمیزی کے معاملے پر احتجاج کیا اور حکومت مخالف نعرے لگائے، طارق فضل کی یقین دہانی پر صحافیوں نے احتجاج ختم کیا۔

طارق فضل چوہدری نے پریس کانفرنس میں کہا کہ جو کچھ عمران خان کیساتھ ہورہا ہے، یہ مکافات عمل ہے، کوئی ادارہ ان کی گالیوں سے نہیں بچا، آج عمران خان لکھ کر دے رہے ہیں کہ کچھ بھی ریکارڈ نہیں، ہم نے 3 نسلوں کا حساب دیا، یہ ایک نسل کا حساب نہیں دے پارہے، حسین نواز سے دادا کے زمانے کا بھی حساب مانگا گیا۔

وہ بولے کہ عمران خان نے نیازی سروسز سامنے آنے تک نہیں کہا خود کی بھی آف شور کمپنی ہے، وزیراعظم سیاسی زندگی کا حساب دینے کے پابند ہیں، عمران خان کی آف شور کمپنی حلال، نواز شريف کی حرام، پی ٹی آئی رہنماء نے پارليمنٹ کی بے توقيری کی، وہ قوم اور نوجوانوں کو گمراہ کررہے ہيں۔

دانیال عزیز کا کہنا تھا کہ اقامہ کا معاملہ درست نکلا، جے آئی ٹی نے گمراہ کرنے کی کوشش کی، عمران خان کا نام الزام خان درست رکھا گیا، ان میں سامنے آکر جواب دینے کی ہمت نہیں، وزیراعظم کے اقامے سے الیکشن کمیشن آگاہ تھا، سپریم کورٹ اور الیکشن کمیشن سے کوئی چیز نہیں چھپی ہوئی۔

انہوں نے چیلنج کیا کہ عمران خان! مرد بنو، بھاگو نہیں، نام لیکر بتائیں کس نے 10 ارب کی آفر کی تھی، پی ٹی آئی سربراہ کے پاس ایک لاکھ 17 ہزار پاؤنڈ کا حساب ہی نہیں۔ سماء

IMRAN KHAN

press conference

JIT

Tariq Fazal Chohadry

Panama

PT

Tabool ads will show in this div