جوڈیشل کمیشن، الیکشن کمیشن پنجاب کے رکن سے جرح، اجلاس پیر تک ملتوی

اسٹاف رپورٹ

اسلام آباد : جوڈیشل کمیشن کا اجلاس پیر تک ملتوی کردیا گیا، آج الیکشن کمیشن پنجاب کے رکن محبوب انور سے جرح کی گئی، ان کا کہنا ہے کہ انتخابی نتائج سے پہلے نواز شریف کی تقریر نہیں دیکھی، اس بارے میں بعد میں پتہ چلا، الیکشن کمیشن کے وکیل کا کہنا ہے کہ ویب سائٹس پر موجود تمام معلومات درست نہیں، جس پر عدالتی کمیشن نے دستاویزات کی تصدیق کی ہدایت کردی۔

چیف جسٹس ناصر الملک کی سربراہی میں جوڈیشل کمیشن کی سماعت میں الیکشن کمیشن پنجاب کے رکن محبوب انور نے کہا کہ نہیں معلوم کہ مکمل نتائج سے پہلے نواز شریف نے تقریر کی، اس تقریر کے بارے میں بعد میں پتہ چلا۔  پی ٹی آئی کے وکیل نے استفسار کیا کہ کیا آپ کو معلوم ہے نواز شریف نے جیت کا اعلان کیا تھا؟ جس پر چیف جسٹس نے حفیظ پیرزادہ کو سوال کرنے سے روک دیا۔

این اے 95 اور دیگر حلقوں میں اضافی پیپرز کی چھپائی کی فہرست پیش کی گئی، الیکشن کمیشن پنجاب کے رکن محبوب انور نے دستاویزات پہچاننے سے انکار کردیا، ان کا مؤقف تھا کہ کہیں نہیں لکھا کہ یہ الیکشن کمیشن کے کاغذات ہیں۔

حفیظ پیرزادہ بولے الیکشن کمیشن نے مطالبے کے باوجود جمع کرائی گئی دستاویزات کی تصديق نہیں کی، الیکشن کمیشن کے وکیل سلمان اکرم راجہ بولے، دستاویزات 76 جلدوں پر مشتمل ہیں، ہر دستاویز کیسے پڑھ سکتے ہیں۔

پی ٹی آئی پیرزادہ کا مؤقف تھا دستاویز الیکشن کمیشن کی ویب سائٹ سے حاصل کیں، سلمان اکرم بولے ویب سائٹ پر موجود ہر دستاویز درست نہیں، جسٹس امیرہانی نے ہدایت کی کہ کل سیکریٹری جوڈیشل کمیشن اور معاون کے کے آغا کی موجودگی میں دستاویزات کا جائزہ لیا جائے۔

محبوب انور نے بتایا کہ صوبائی حکومت نے ایڈیشنل چیف سیکریٹری پنجاب راؤ افتخار سے نمبرنگ اور بائیڈنگ کیلئے 0 سے 200 افراد طلب کئے تھے، 78 افراد فراہم کئے گئے۔ سماء

transport

اجلاس

reply

crowned

Tabool ads will show in this div