فاٹا میں سیاسی اصلاحات کیلئے دوصدارتی حکم نامے جاری کردئےگئے

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹر


اسلام آباد: صدرزرداری نے فاٹا میں سیاسی اصلاحات پرعملدر آمد کیلئےآج دوصدارتی حکم نامے جاری کردئےھیں۔


صدرزرداری کہتے ہیں کہ نئے صوبوں کیلئے عوام سے رائے لی جائے گی۔ قبائیلی عوام کی قربانیوں کو فراموش نہیں کیا جاسکتا۔


صدر آصف علی زرداری نے ایف سی آر 2011 کے ترمیمی بل اور پولیٹیکل پارٹیز آرڈر پردستخط کردئے ہیں۔ دستخط کی تقریب ایوان صدر میں ہوئی۔


 فاٹا اصلاحات بل کے تحت قبائلی علاقوں میں سیاسی سرگرمیوں کی اجازت ہوگی۔ ایف سی آر میں ترامیم کے تحت ملزم کو ضمانت کا حق حاصل ہوگا۔۔ گرفتاری کے چوبیس گھنٹے  میں ملزم کو مجاز اتھارٹی کے سامنے  پیش کرنے کی پابندی ہوگی۔ خواتین، بچے،  16 سال سے کم اور 65 سال سے زائد عمر کے افراد کو  گرفتار نہیں کیا جاسکے گا۔کسی بھی قبیلے کے خلاف کارروائی مرحلہ وار کی جائے گی۔ مقدمات کا فیصلہ مقررہ وقت میں جائے گا۔


صدر آصف علی زرداری نے فاٹا اصلاحات بل پر دستخط کے بعد تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ  ملک کو جب بھی ضرورت پڑی تو قبائیلی عوام نے لبیک کہا ہےاورآج حکومت نے فاٹا کے عوام سے کیا گیا وعدہ پورا کردیا۔


صدر زرداری نے ملک میں نئے صوبے بنانے سے متعلق کہا کہ اس سلسلے میں عوام سے رائے لی جائے گی۔ اور حکومت کسی کو حق سے محروم نہیں رکھنا چاہتی ہے۔


انھوں نےمزید کھا کہ عوام نے فاٹا اصلاحات بل کا خیرمقدم کیا ہے۔ اس سے جہاں سیاسی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا ۔۔ وہیں علاقے کے عوام کو گھٹن کے ماحول سے بھی نجات مل سکے گی اور قبائلی عوام پر صدیوں سے عائد پابندیاں ختم ہوں گی۔ سماٴ

میں

جاری

simon

Tabool ads will show in this div