ایم کیوایم کے باغی رہنما سلیم شہزاد کا بڑا اعلان

172.16.22.9_07_20170715141059891

کراچی : ایم کیو ایم سے علیحدہ ہونے والے رہنما سلیم شہزاد نے اپنی نئی سیاسی جماعت بنانے کا اعلان کردیا، سماء سے خصوصی گفت گو میں موجودہ صورت حال پر اپنی رائے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف کو استعفیٰ نہیں دینا چاہیئے۔

طویل عرصے خود ساختہ جلا وطنی کاٹ کر پاکستان آنے والے ایم کیو ایم کے سابق رہنما سلیم شہزاد نے اپنی نئی سیاسی جماعت بنانے کا اعلان کردیا۔

172.16.22.9_07_20170715141051461 کراچی میں سماء سے خصوصی گفت گو میں سلیم شہزاد کا کہنا تھا کہ اپنی ایک الگ سیاسی جماعت بنا رہا ہوں، جماعت کا نام ابھی تجویز نہیں کیا، عوامی خدمت کیلئے کوئی پلیٹ فارم چاہیے تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ سیاست میں ہلچل مچا کر گیا تھا،دوبارہ ہلچل مچاؤں گا، متحدہ کے غیر فعال کارکنوں اور رہنماؤں سے رابطے میں ہوں، موجودہ صورت حال پر بات چیت میں سلیم شہزاد کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نواز شریف کو استعفیٰ نہیں دینا چاہئیے، بلکہ سب کو سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار کرنا چاہیئے۔ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ انہیں کراچی پہنچنے پر ایئرپورٹ سے گرفتار کرلیا گیا تھا۔ گزشتہ برس 22 اگست کو ایم کیو ایم لندن کے بانی الطاف حسین کی جانب سے اشتعال انگیز تقریر اور پاکستان مخالف نعروں پر جہاں متحدہ پاکستان کے سینئر رہنما ڈاکٹر فاروق ستار نے الطاف حسین سے علیحدگی اختیار کی،وہیں پارٹی بھی دو دھڑوں میں تقسیم ہوگئی، تاہم سلیم شہزاد نے خود کسی دھڑے میں شمولیت اختیار نہیں کی۔ اس سے قبل 2014میں سلیم شہزاد کی جانب سے جاری سنسنی خیز بیان نے بھی ملکی سیاست میں ہلچل مچائی۔ سلیم شہزاد نے مارچ 2014میں متحدہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ایم کیو ایم میں متعدد ایسے عناصر موجود ہیں جو کراچی میں بھتہ خوری، قتل عام اور اسمگلنگ جیسے واقعات میں ملوث ہیں۔سلیم شہزاد کے بغاوتی بیان کے بعد بانی ایم کیو ایم کی جانب سے اسی روز سلیم شہزاد کی پارٹی رکنیت معطل کر دی گئی جو تاحال بحال نہ ہوسکی، انہوں نے 2ماہ قبل 15اکتوبر 2015کو بھی ایک بیان جاری کیا کہ وہ سیاست چھوڑنے کا سوچ رہے ہیں۔ سولہ ستمبر2016کو ایک نجی ٹی وی پروگرام میںمتحدہ قومی موومنٹ کے سابق رہنما سلیم شہزاد نے کہا تھا کہ ایم کیو ایم مہذب لوگوں کی جماعت تھی۔ کچھ لوگوں نے پارٹی کارکنوں کو ایسے کاموں پر لگادیا جس سے پارٹی پر دہشت گردی کا لیبل لگ گیا میں بھی اس گناہ میں شامل ہوں اور اس داغ کو دھونا چاہتا ہوں۔ واضح رہے کہ کراچی کی انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے ڈاکٹر عاصم کے ہسپتال میں شدت پسندوں کا علاج کروانے کے مقدمے میں سلیم شہزاد کی گرفتاری کا حکم جاری کیا ہوا تھا۔ خصوصی عدالت نے گذشتہ برس جنوری میں سلیم شہزاد، میئر کراچی وسیم اختر، انیس قائم خانی اور پاکستان پیپلز پارٹی کے عبدالقادر پیٹیل کو مفرور قرار دیتے ہوئے ان کے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کیے تھے۔ سلیم شہزاد نے سنہ 1992 میں کراچی میں ایم کیو ایم کے خلاف ہونے والے آپریشن کے بعد جلاوطنی اختیار کر لی تھی۔ سماء

KARACHI OPERATION

FAROOQ SATTAR

saleem shahzad

new political party

PSP

Tabool ads will show in this div