پاناما جے آئی ٹی؛ منی لانڈرنگ سے متعلق اسحاق ڈار کا بیان درست قرار

Jul 11, 2017

QM JIT and DAR Pkg 10-07

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/07/QM-JIT-and-DAR-Pkg-10-07.mp4"][/video]

اسلام آباد: پاناما جے آئی ٹی رپورٹ کا ایک اور تہلکہ خیز انکشاف سامنے آگیا۔ منی لانڈرنگ سے متعلق اسحاق ڈار کے بیان کو درست قرار دیا گیا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا کہ شواہد سے ثابت ہوگیا کہ اسحاق ڈار کا اعترافی بیان حقائق پر مبنی تھا۔

جے آئی ٹی میں پیشی کے بعد ایک بار پھر اعترافی بیان کو ردی کا ٹکڑا قرار دینے والے اسحاق ڈار سے متعلق بھی تہلکہ خیز انکشاف۔ پاناما جے آئی ٹی نے بیان کو حقائق پر مبنی قرار دے دیا۔

حتمی رپورٹ میں جے آئی ٹی نے کہا ہے کہ تحقیقات کے دوران بینکنگ ریکارڈ، شواہد اور گواہوں کے بیانات سے بیان حلفی کی تصدیق ہوگئی۔

انکوائری کے دوران سامنے آیا کہ 1992 میں نوازشریف نے کئی جعلی اکاؤنٹ کھولے تھے۔ ان اکاؤنٹس کا ذکر اسحاق ڈار کے بیان حلفی میں بھی موجود ہے جس کے بعد زبردستی قرار دیا جانے والا بیان حقیقی ثابت ہوا۔

ان حقائق کی روشنی میں حدیبیہ پیپرملز اور حدیبیہ انجینئرنگ سمیت شریف فیملی کے خلاف تین ریفرنسز دوبارہ کھولنے کی سفارش بھی کی گئی ہے۔ سما

JIT report

panama case

Confession Statement

Tabool ads will show in this div