رینجرز نے کراچی میں اسٹریٹ کرائم کی وارداتوں کا حل ڈھونڈ لیا

Jul 07, 2017

RANGERS ON CRIME KHI PKG 07-07 ALI

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2016/07/RANGERS-ON-CRIME-KHI-PKG-07-07-ALI-.mp4"][/video]

کراچي: شہر ميں اسٹريٹ کرائم کي بڑھتي وارداتوں کا رينجرز نے توڑ ڈھونڈ نکالا۔ ايپکس کميٹي کے اجلاس ميں اسٹريٹ کرمنلز کو دہشت گرد قرار دينے کي سفارش کرتے ہوئے مقدمات ميں انسداد دہشت گردي کے مقدمات شامل کرنے کي تجويز دے دي۔

ذرائع کے مطابق رینجرز حکام نے ایپکس کمیٹی میں اسٹریٹ کرائم پر تفصیلی بریفنگ دی۔ اسٹریٹ کرائم زیادہ رش والے مقامات پر ہوتے ہیں۔ اسٹریٹ کرائم کی بڑی وجہ سڑکوں پر ہونے والے مظاہرے ہیں۔ زیادہ وارداتیں لوڈشیڈنگ کےدوران ہوتی ہیں۔

رینجرز حکام کے مطابق تقریباً ساڑھے سات ہزار ملزمان پولیس کےحوالے کیے، صرف چار سو کو سزا ہوئی۔ کراچی میں بڑھتی ہوئی کار پارکنگ مافیا اور اس سے ہونے والے ٹریفک جام میں بھی وارداتیں ہوتی ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کرمنلز کے سب سے بڑے سہولت کار موبائل مارکیٹ کے کچھ دکان دار ہیں۔ سما

APEX COMMITTEE

anti-terrorism act

mobile markets

Tabool ads will show in this div