صحافیوں پر تشدد، توہین عدالت کیس تحریری حکم نامہ جاری، آئی جی کی سرزنش

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ

کراچی : سندھ ہائیکورٹ کے احاطے میں صحافیوں پر نقاب پوشوں کے تشدد اور توہین عدالت کیس سے متعلق عدالت نے تحریری حکم نامہ جاری کردیا۔

تحریری حکم میں کہا گیا ہے کہ آئی جی سندھ نے عدالت کے سامنے مکمل سچ بیان نہیں کیا، وقوعہ کے روز کئی پولیس اہلکار موجود تھے، آئی جی نے نام چھپائے، کئی افسران کا تبادلہ کیا گیا۔

تحریری حکم کے مطابق آئی جی نے تقرری اور تبادلوں کا معاملہ عدالت کے سامنے چھپایا، ایس پی صدر غنی کو ہٹا کر ذیشان بٹ کو چارج دیا گیا، غلام حیدر جمالی سے غلط بیانی پر پوچھا گیا تو انہوں نے خود کو عدالت کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا۔

تحریری حکم کے مطابق آئی جی سندھ نے غیرمشروط معافی مانگ لی، مکمل سچ نہ بتانے اور حقائق چھپانے پر آئی جی سندھ کو معاف نہیں کیا جاسکتا۔

عدالت کا تحریری حکم میں مزید کہنا ہے کہ قانون کی بالادستی نہ ماننے اور مکمل حقائق نہ بیان کرنے تک آئی جی کو معاف نہیں کیا جائے گا۔ سماء

میں

کا

جی

آئی

سندھ

جاری

ہائیکورٹ

افغانستان

contract

Tabool ads will show in this div