شہر قائد میں بستیاں اجڑنے لگیں،قبرستان آباد،چوبیس گھنٹوں میں 43افراد قتل

کراچی میں امن و امان کیلئے موثر اقدامات کے حکومتی دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے ہیں۔ لوگوں کو اغوا کرنے کے بعد بے دردی سے قتل کرکے لاشیں پھینکی جا رہی ہیں۔

 گزشتہ رات  سے اب تک مختلف علاقوں سے ستائیس لاشیں مل چکی ہیں جبکہ ایک شخص کو فائرنگ کرکےقتل کیا گیا ہے، دو دن میں جاں بحق افراد کی تعداد چوالیس ہوگئی۔ بوریوں میں لاشوں کے ساتھ رکھی گئی پرچیوں پر لکھا ہے کراچی میں جنگ چاہئے یا امن۔ 

کراچی کے مختلف علاقوں میں رات  سے بوری بند لاشیں ملنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اورنگی ٹاؤن میں قطر اسپتال کے قریب فائرنگ سے ایک شخص جاں بحق ہوا۔ لسبیلہ میں ندی سے تین اور لیاری میں مرزا آدم خان روڈ سے دو لاشیں ملیں۔

بلدیہ ٹاؤن سے 7 ، ماڑی پور سے 1، شیر شاہ پنکھا ہوٹل کے قریب سے4، غنی چورنگی سے ایک،  لی مارکیٹ اور گارڈن سے3، 3جبکہ سعید آباد اور منگھوپیر سے ایک، ایک لاش ملی ۔

مختلف علاقوں سے کئی افراد کو اغوا کیا گیا اور گاڑیوں پر فائرنگ کی گئی، پاک کالونی میں گاڑی پرفائرنگ سے2 اور اولڈ سٹی ایریا میں بس پر فائرنگ سے 3 مسافر زخمی ہوئے۔ سعيد آباد ميں نامعلوم افراد شادی ہال کے قريب دستی بم پھينک کر فرار ہو گئے۔  رنچھوڑ لائن ميں بلوچ پارک کے قريب دستی بم حملے سے دکانوں کو جزوی نقصان پہنچا ہے۔ سماء

میں

ban

Syria

premier

britain

shops

Tabool ads will show in this div