وسیم کی ہلاکت، وزیراعلیٰ سندھ کا نوٹس، 4 پولیس اہلکار گرفتار، 2 افسران معطل

ویب ایڈیٹر

کراچی : وزیراعلیٰ سندھ نے پولیس حراست میں سیاسی کارکن کی ہلاکت کے واقعے کا نوٹس لے لیا، قائم علی شاہ کی ہدایت پر 4 پولیس اہلکاروں کو گرفتار کرلیا گیا، ڈی آئی جی ویسٹ فیروز شاہ کو تحقیقات کا بھی حکم دے دیا۔

وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے عزیز بھٹی پولیس اسٹیشن میں مبینہ تشدد سے ملزم وسیم کی ہلاکت کے واقعے کا نوٹس لے لیا، آئی جی سندھ کو فون کیا اور واقعے کی تحقیقات اور ملوث اہلکاروں کیخلاف کارروائی کی ہدایت کردی۔

آئی جی سندھ نے وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت پر تحقیقات ڈی آئی جی ویسٹ فیروز شاہ کے حوالے کردی، واقعے میں ملوث سب انسپکٹر سمیت 4 پولیس اہلکاروں کو گرفتار کرلیا گیا۔

پولیس نوٹیفکیشن کے مطابق ڈی ایس پی نیو ٹاؤن ناصر لودھی کو معطل کرتے ہوئے پولیس ہیڈ آفس رپورٹ کرنے کا حکم دیا گیا ہے جبکہ ایس ایچ او مقصود رضا کی تنزلی کردی گئی، انہیں سب انسپکٹر سے اے ایس آئی بنادیا گیا ہے۔

نوٹیفکیشن میں بتایا گیا ہے کہ ملزم وسیم کی گرفتاری اور تشدد میں ملوث پولیس ٹیم کو معطل بھی کردیا گیا ہے، اہلکاروں میں سب انسپکٹر ضمیر حسین، ہیڈ کانسٹیبل خیر محمد، کانسٹیبل سکندر اور اسد اللہ شامل ہیں۔

واضح رہے کہ عزیز بھٹی پولیس اسٹیشن میں بلدیہ سے گرفتار ایم کیو ایم کا کارکن وسیم مبینہ پولیس تشدد سے ہلاک ہوگیا تھا، مقتول کے پوسٹ مارٹم میں پولیس سرجن نے سر پر گہری چوٹ سے موت کی تصدیق کی تھی۔

متحدہ قومی موومنٹ نے کارکن کی پولیس تشدد سے ہلاکت پر 2 روزہ یوم سوگ کا اعلان کیا ہے، کراچی، حیدرآباد، میرپور خاص، سکھر سمیت مختلف شہروں میں کاروباری مراکز بند ہونا شروع ہوگئے ہیں جبکہ پیٹرول پمپس پر بھی گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگنے کی اطلاعات ہیں۔ سماء

India vs Pakistan

سندھ

defence

aid

Tabool ads will show in this div