سمن لیک وزیراعظم ہاؤس کا نہیں جے آئی ٹی کا کام ہوگا، اٹارنی جنرل

AG REPLY PKG 16-06 Mukkaram

اسلام آباد : پاناما ہنگامہ جاری ہے، اٹارنی جنرل نے جے آئی ٹی کی درخواست پر سپریم کورٹ میں جواب جمع کرادیا، جس میں صاف صاف کہہ دیا گیا ہے کہ سمن وزیر اعظم ہاؤس سے لیک نہیں ہوئے، یہ کام خود جے آئی ٹی کا ہوگا۔ وزیراعظم آفس کے مطابق تحقیقات میں کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جارہی، تمام اداروں سے بات ہوئی سب نے جے آئی ٹی کے الزامات مسترد کردیئے۔

تمام اداروں نے جے آئی ٹی کے الزامات کو مسترد کردیا، وزیراعظم ہاؤس نے سمن لیک نہیں کئے، سمن لیک کا کام خود جے آئی ٹی کا ہوگا، نیب نے 77 افسران کو نوٹس جاری کئے، اٹارنی جنرل نے جے آئی ٹی کی درخواست پر سپریم کورٹ میں جواب جمع کرادیا۔

جواب ميں مزيد کہا گيا ہے کہ ایف بی آر نے کم وقت میں ریکارڈ فراہم کیا، وزارت قانون کے مطابق عدالتی احکامات پر دو دن میں عملدرآمد کردیا تھا۔

اٹارنی جنرل کے جواب ميں مزيد کہا گيا کہ جے آئی ٹی کے بعض ارکان پر جانبداری کا الزام عائد ہوا، فریقين کو سنے بغیر جے آئی ٹی درخواست پر فیصلہ نہیں ہوسکتا۔

اٹارنی جنرل نے جواب ميں بتایا کہ وزیراعظم آفس کے مطابق جے آئی ٹی نے ٹیلی فون ٹیپ کا اعتراف کیا، وزیراعظم نے گواہان کی مانیٹرنگ کا اعتراف کیا، سوشل میڈیا کی بھی بھرپور مانیٹرنگ کی گئی۔ سماء

JIT

ATTORNEY GENERAL

PM house

Panama

Ashtar Ausaf

Summon Leaks

Tabool ads will show in this div