ممبرقومی اسمبلی جمشید دستی قید ہوگئے؟

e7dfd1f8-80c4-4ce3-b181-8e996197ffce - Copy

جمشید دستی کسی تعارف کے محتاج نہیں وہ جنوبی پنجاب کے پسماندہ ضلع لیکن سیاسی طور پر اس زرخیز علاقہ سے تعلق رکھتےہیں جس نے بابا جمہوریت نواب زادہ نصراللھ خان اور شیر پنجاب کا لقب پانے والے ملک غلام مصطفی کھر جیسے اعلی پائے کے سیاست دانوں کو جنم دیا۔ جمشید دستی نے بھی بہت کم عرصہ میں اپنی بے قابو گفتگو اور انوکھے کارناموں کی وجہ سے بڑی شہرت حاصل کرلی ہے جمشید دستی کی وجہ شہرت مسافر بسوں کی ڈرائیونگ کرنا گدھا ریڑھی چلانا ،دودھ دہی کی دوکان پر ان کو فروخت کرنا اور تو اور سڑک پر بیٹھ کر جوتیوں کو پالیش کرنے کے مقابلے میں حصہ لینا کبھی پارلیمنٹ لاجز میں شراب کی خالی بوتلوں کا سیکنڈل منظر عام پر لانا اپنا احتجاج ریکارڈ کرانے کیلئے سخت گرمی میں اپنے کارکنوں کے ساتھ سائیکل ریلی پرمظفرگڑھ سے اسلام آباد روانہ ہونا اور وہاں پر پہنچنا ان سب انوکھے کارناموں سے جمشید دستی کی تاریخ بھری پڑی ہے یہی وجہ ہے اس ایم این ائے کو پاکستان کا غریب ووٹررز جانتا اور پہچانتا ہے۔

a8004479-db93-4a8c-950e-c5198e5465e9 - Copy - Copy be05d1b8-6f14-4cd8-b782-2a95b1cd0dd3 - Copy - Copy c6d12a92-ba10-4555-9f63-ec74e867ad77 - Copy

جمشید دستی نے ہمیشہ الیکشن بڑے بڑے ناموں کے خلاف لڑا اور ایک سے دو حلقوں میں ابھی تک ناقابل شکست ممبر قومی اسمبلی طور پر مظفر گڑھ میں سامنے آئے۔ آج کل اس غریب پرور ایم این ائے پر مشکلات کے بادل منڈلا رہے ہیں جمشید دستی نے کچھ روز قبل کسانوں کے ساتھ مل کرہیڈ کارلو کے قریب ڈینگا کینال کے بند پانی کو حکومتی اجازت کے بغیر کھول دیا تھا اور یہ خبر بھی ہر نیوز چینل کی زینت بنی اور اس کے بعدجمشید دستی نے حال ہی میں پارلیمنٹ کے سیشن میں اپوزیشن کے ساتھ مل کر اقتدار کی پارٹی خصوصا وزیرعظم کے خلاف شدید نعرے بازی کی بلکہ احتجاج کرنے والے ایم این ائز میں سب سے زیادہ نعرے بازی کرنے والے ممبرقومی اسمبلی کے طور پر نظر آئے جمشید دستی پارلیمنٹ کے سیشن کے بعد واپس اپنے ابائی گھر مظفرگڑھ آرہے تھے کہ چوک سرور شہد کےقریب پنجاب پولیس کے جوانوں نے ان کو دھر لیا اور ان کوپانی چوری کار سرکار میں مداخلت کے مقدمہ میں تھانہ کرم داد قریشی کی حوالات میں بند کردیا بس پھر کیا تھا اور ان کو چودہ روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر ملتان کی سنڑل جیل میں رات کی تاریکی میں منتقل کردیا گیا۔

ecdc6ca2-e227-4f6b-b4e4-e020ae7ca8d2

سنڑل جیل میں قید ممبر قومی سمبلی جمشید دستی سے پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیرمین شاہ محمود قریشی اور سئینر سیاستدان جاوید ہاشمی پی ٹی آئی کے ایم این ائے ملک عامر ڈوگر اور کئی کارکنوں نے ملاقات کی کوشش کی لیکن جیل انتظامیہ نے ان کو جمشید دستی سے ملاقات کرنے سےروک دیا جس پر دونوں سئینر سیاستدانوں نے حکومت اور جیل انتظامیہ کوخوب تنقید کا نشانہ بنایا اور اس عمل کو غیر قانونی امریت کا عمل قرار دیا ہے شاہ محمود قرییشی سے میری جب بات ہوئی تو ان کا کہنا تھا کہ جمشید دستی پارلیمنٹ کے منتخب نمائندہ ہیں اور اجکل بجٹ کا سیشن چل رہا ہے سیشن کے دوران ایک منتخب نمائندہ کی گرفتاری غیر قانونی ہے ان کو گرفتار نہیں کیا جاسکتا اور تو اور میاں نواز شریف کو اپنا لیڈر کہنا والے بے باک سئینر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے تو مسلم لیگ کی قیادت اور وزرا کو ماضی میں ان کی قید کے ایام بھی یاد دلائے اور اس عمل کو بدترین امریت کی مثال قراردیا۔ خیرجیل انتظامیہ نے بڑی تگ و دو کے بعد پروڈکیشن لیڑ پر جمشید دستی کے دستخط کراکے پی ٹی ائی کے رہنما رانا عبدالجبار کے حوالے کردیا۔

343f6d1d-3370-479c-81d3-cb134d5130fd - Copy 9940da10-f1e5-4b75-b1ca-5e88ede57366 - Copy - Copy

جمشید دستی کو دودن ملتان سنڑل جیل کی قید کے بعد ڈیرہ غازیخان کی جیل میں بڑی خاموشی سے منتقل کردیا گیا ہےاب ان پر ایک کی بجائے کئی مقدمات سامنے آئے ہیں اقدام قتل دنگا فساد دہشت گردی پھیلانے نقص امن ناجائز اسلحہ رکھنا کارسرکار میں مداخلت سمیت ان کے خلاف درج کئی مقدمات سامنے لائے گئے ہیں ایک مقدمہ میں ابھی تک ان کی ضمانت منظور ہوچکی ہے اور ابھی باقی مقدمات کا ٹرائل جاری ہے اور اس وقت جمشید دستی کے قید کی خبر جنگل میں اگ کی طرح پھیلی ہوئی ہے اور ان گرفتاری کے خلاف پارلیمنٹ سے لے کر سرائیکی پارٹیوں سمیت مختلف مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد ملک کے مختلف حصوں میں احتجاج کیے جارہے ہیں کچھ سیاسی حلقہ یہ بھی کہتے نظر آرہے ہیں جمشد دستی کوپارلیمنٹ میں حکومت کے خلاف احتجاج کے بعد فورا گرفتارکرنا اور ان کو روز بروز مقدمات میں الجھانے اور شییخ رشید پر پاریمنٹ کے دروازہ پر ملک نوراعوان نامی مسلم لیگ ن کے غیر ملکی عہدہ دار کا حملہ کرنا ایک سوچی سمجھی سازش ہے تاکہ کوئی حکومت کے خلاف منہ نہ کھولے ویسے اس بات کو سامنے رکھا جائے جمشید دستی کئی بار نہیں بلکہ ہمشہ ہی حکومت کے خلاف سخت زبان استعمال کرتے نظر آئے ہیں کئی سالوں سے ان پر چلنے والے مقدمات میں ان کو ابھی تک گرفتار کیوں نہیں کیا گیا تھا اور شیخ رشید کے ساتھ اس طرح کا رویہ اور پھر سئینر سیاست دانوں کو جیل میں ملاقات نہ کرنے دینا حکومت پر سوالیہ نشان ہے۔

member national assembly

jamsheed dasti

Tabool ads will show in this div