سائیں تو سائیں،سائیں کی حاضری بھی سائیں

اسٹاف رپورٹ


سیہون   :   سیہون میں لال شہباز قلندر کے عرس میں شدید گرمی سے انیس زائرین کی جان گئی، مگر کیا کہنے ہیں سندھ کے وڈے سائیں کے، اختتامی تقریب میں وڈے سائیں پہنچے تو مزار پر گرمی کا نام ونشان تک مٹ گیا۔ ہر طرف ٹھنڈی ٹھار ہوائیں چلنے لگیں۔

سائیں تو سائیں، سائیں کی حاضری بھی سائیں، سیہون میں لال شہبازقلندر کے عرس میں شدید گرمی سے انیس زائرین جان سے گئے، مگر جب سائیں کی آمد کا طبل بجا تو مزار کےاحاطے کا ماحول ہی بدل گیا۔

وزیراعلیٰ سندھ کو گرمی سے بچانے کیلئےمزار پرائیرکنڈیشنرز لگا دیئے گئے، گرمی کا نام ونشان تک مٹ گیا، ہرطرف ٹھنڈی ٹھار ہوائیں چلنے لگیں، بیش قیمت ائیرکنڈیشنرز کی ہوا کہیں غریب زائرین کو نہ لگ جائے، اس لئےدن تین بجے تپتی دھوپ میں زائرین کو مزارسےباہر نکال دیا گیا۔

ٹھنڈے ٹھنڈے ماحول میں سائیں نے وزیروں کے ہمراہ دربار پر حاضری دی، فاتحہ خوانی کے بعد باہر آئے تو بولے، مرنے والوں میں کچھ دل اور کچھ سانس کے مریض تھے۔ قائم علی شاہ نے گرمی سے جاں بحق ہونے والے زائرین کے لواحقین سے اظہار تعزیت بھی کیا۔ سماء

کی

sargodha

kotli

Tabool ads will show in this div