کراچی میںجاری سرچ آپریشن کےدوران۸۳گرفتاراور۵۴پر مقدمات درج کیئے:وسان

اسٹاف رپورٹر


کراچی : وزیرداخلہ سندھ منظور وسان نے کہا ہے کہ تاخیر سے آپریشن شروع ہونے کی وجہ سے کئی شرپسند عناصر فرار ہوگئے البتہ کچھ پکڑے جانے کی امید ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ رات سے اب تک تیراسی افراد کو گرفتار کیا گیا اور چون کے خلاف مقدمات درج کئے گئے۔


وزیرداخلہ سندھ منظوروسان کہتے ہیں کہ تمام سیاسی جماعتوں کی مشاورت سے کراچی میں آپریشن شروع کیا گیا۔ پولیس ٹریننگ سینٹرمیں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے منظوروسان کا کہنا تھا کہ آپریشن کے مثبت نتائج برآمد ہونگے۔


پولیس ٹریننگ سینٹر رزاق آباد میں بارہویں ایگلیٹ دستے کی پاسنگ آؤٹ پریڈ ہوئی اور نو خواتین سمیت تین سو اٹھائیس اہلکاروں پر مشتمل دستہ پاس آؤٹ ہوا ، اس موقع پر تربیت حاصل کرنے والےجوانوں نے عملی مظاہرہ بھی کیا۔


تقریب میں بلند عمارتوں سے اترنے ، نشانہ بازی، دہشت گردوں کے قبضے سے لوگوں کو رہا کرانےاور کسی بھی ہنگامی صورتحال پر قابو پانے کی صلاحیت کا مظاہرہ کیا گیا۔


 سندھ پولیس نے مہمان خصوصی منظور وسان کو بھی ٹوپی پہنا دی اور وزیرداخلہ اس پر بھی خوش نظر آئے، انھوں نے خوشی خوشی میں پولیس افسران کے بچوں کی اسکالر شپ کیلئےانتظامات کرنے کا اعلان کیا جبکہ بتایا کہ  اہلکاروں کی لائف انشورنس کرائی جائے گی اور تنخواہیں پنجاب پولیس کے برابر کی جائیں گی۔


 منظور وسان نے بتایا کہ کراچی میں امن کیلئے آپریشن پر سیاسی جماعتیں متفق نہیں تھیں البتہ اب اتفاق ہوگیا ہے۔ 


سیکیورٹی اہلکاروں نے شہر کے مختلف علاقوں میں تلاشی آپریشن کیا ہےاور وزیراعظم نے نو حساس مقامات پر کارروائی کی منظوری دی تھی، لیکن منظور وسان نے ان مقامات کے بارے میں بتانے سے انکار کرتےہوئے کہا کہ آپریشن میں تاخیر سے کئی شرپسند فرار ہوگئے ہوں گے۔ سماٴ

burger

شوبز

boys

Tabool ads will show in this div