اسلامی ملٹری اتحاد کے دائرہ کار کا ابھی تعین نہیں ہوا،سرتاج عزیز

sartaj

اسلام آباد: وزیر اعظم کے مشیر برائے خارجہ امور سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ اسلامی ملٹری کولیشن کے دائرہ کار کا ابھی تک کوئی تعین نہیں ہوا، 41 رکنی کولیشن کے وزراء دفاع کے اجلاس میں دائرہ کار اور مقاصد طے کئے جائیں گے، پاکستان علاقائی معاملات میں متوازن پالیسی اختیار کئے ہوئے ہے، جنرل (ر) راحیل شریف کا انسداد دہشتگردی میں وسیع تجربہ ہے، اسی تجربے کی بنیاد پر انہیں اسلامی ملٹری کولیشن کے سربراہ کی ذمہ داری تفویض کی گئی ہے، ان کی تقرری سے ہماری خارجہ پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی۔

جمعرات کو ایوان بالا میں سینیٹر فرحت اللہ بابر کے توجہ دلاﺅ نوٹس کے جواب میں سرتاج عزیز نے کہا کہ پہلے اسلامی ملٹری کولیشن میں 34 ارکان تھے لیکن اب ان کی تعداد 40 ہوگئی ہے۔ اس کولیشن کے بارے میں یہ کہا گیا کہ اس کے تمام ارکان اس بات کا خود فیصلہ کریں گے کہ وہ فوجی تعاون، استعداد کار سمیت کس سرگرمی میں شرکت کریں گے۔

مشیر برائے خارجہ امور نے کہا کہ دسمبر 2015ء میں بتایا گیا کہ وزراء دفاع کے اجلاس میں کولیشن کے پروگرام اور طریقہ کار کا تعین کیا جائے گا لیکن یہ اجلاس ابھی تک نہیں ہوا۔ جیسے ہی کولیشن کے طریقہ کار کے بارے میں کوئی فیصلہ ہوگا اسے پارلیمنٹ میں پیش کردیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی پالیسی دس اپریل 2015ء کی پارلیمنٹ کی اس قرارداد کے عین مطابق ہے کہ ہم علاقائی معاملات میں توازن برقرار رکھیں گے اور حرمین شریفین کی حفاظت کے لئے اپنا کردار ادا کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ جنرل (ر) راحیل شریف کا انسداد دہشتگردی میں وسیع تجربہ ہے اور اسی تجربے کی وجہ سے انہیں ذمہ داری تفویض کی گئی ہے۔

ریاض اعلامیہ میں اگرچہ ایران کا ذکر ضرور ہے تاہم اس حوالے سے خدشات درست نہیں ہیں اور ایران کے خلاف کارروائی کا مفروضہ درست نہیں۔ ہم سمجھتے ہیں کہ جنرل (ر) راحیل شریف کی ملٹری کولیشن میں موجودگی سے توازن قائم ہوگا۔ ریاض اعلامیہ میں ایران کے بارے میں بیان ایک سیاسی بیان تھا۔ تاہم یہ حقیقت ہے کہ ایران، عراق اور شام کے تنازعات فرقہ وارانہ نوعیت کے ہی ہیں اور اس وقت اسلامی اتحاد کی اشد ضرورت ہے۔ اس سلسلے میں پاکستان ملائیشیا‘ انڈونیشیا اور ترقی کی طرح مسلمان ممالک کو متحد دیکھنا چاہتا ہے۔ اے پی پی

RAHEEL SHARIF

sartaj aziz

anti terrorism

Foreign policy

Islamic military alliance

Tabool ads will show in this div